پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے پاکستان مسلم لیگ ن کے صدر اورقومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی بریت کے فیصلے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ شہباز شریف کو لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے ضمانت ملنا خوش آئند ہے اور احتساب کے نام پر جاری انتقام کے عمل پر ہمارے جو تحفظات تھے وہ اب عدالتوں کی جانب سے بھی سچ ثابت ہورہے ہیں،اپوزیشن اتحاد نے پہلے ہی دن کپتان کو مشورہ دیا تھا کہ وہ احتساب کے عمل کو بلاتفریق رکھیں نا کہ احتساب کے عمل سے انتقام کی بو آئے،آج مختصر فیصلے میں بھی عدالت کی جانب سے یہ اشارہ ملا ہے کہ جس شوگر مل کا چیف ایگزیکٹیو حمزہ شہباز ہے اُس کیس میں شہباز شریف کو 80دن تک زیر حراست رکھنا نا انصافی ہے،اسفندیار ولی خان نے مزید کہا کہ احتساب کو جس طرح انتقام کے طور پر استعمال کیا جارہا ہے اب اس حالت میں عوام کی نظریں عدالتوں پر لگی ہوئی ہیں،بلا امتیاز اور غیر جانبدارانہ احتساب کے بغیر کرپشن کا خاتمہ ممکن نہیں،جانبدارانہ احتساب سے کرپشن کو مزید تقویت ملی گی اور کرپٹ لوگ چھتریاں بدلتے رہیں گے،ہمارا اب بھی مطالبہ ہے کہ احتساب کے عمل کو بلاتفریق رکھا جائے ،اگر میاں نواز شریف کے بچوں اور زرداری کی بہن سے منی ٹریل مانگا جاسکتا ہے تو عمران خان کی بہن کو کیوں صرف جرمانے پر چھوڑا جارہا ہے اگر احتساب کا یہی طریقہ کار رہا تو کپتان کو رسوائی کے سوا کچھ بھی ہاتھ نہیں آئے گا۔