پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ترجمان صدرالدین مروت نے باچا خان میڈیکل کالج میں باچا خان کے نام سے منصوب مختلف سیکشنز کے نام تبدیل کرنے پر بورڈ آف گورنرز کے متعصبانہ رویے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس خطے کی آزادی کیلئے باچا خان نے جو لازوال قربانیاں دی ہے اس کی ساری دنیا معترف ہے اور انہی قربانیوں کی بدولت آج یہ بورڈ آف گورنرز ان عہدوں پر براجمان ھونے کے اھل ھوگئے ھیں۔اگر باچا خان انگریزوں کے خلاف قربانیاں نہ دیتے اور انہیں بر صغیر سے نکال باہر نہ کرتے تو آج یہ لوگ انگریزوں کے بوٹ صاف کر رہے ھوتے مگر افسوس مطالعہ پاکستان سے متاثر ایم ٹی آئی بورڈ آف گورنرز نے اپنے محسن کے نام کو ھٹاکر موجودہ حکومت کو خوش کرنے کیلئے پختون دشمنی کا ثبوت دیا ھے حالانکہ باچاخان حقیقت میں ایک قومی ھیرو ھیں کسی کے ان نازیبا ہتکھنڈوں سے انھیں پختونوں کے دلوں سے نھیں نکالا جا سکتا بلکہ اس بورڈ نے عوام کی نظروں میں اپنی حیثیت گھٹا دی ھے،صدرالدین مروت نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کو بدنام زمانہ پراجیکٹس بی آر ٹی اور بلین سونامی ٹری کے علاوہ کوئی بھی بڑا پراجیکٹ شروع کرنے کی توفیق نصیب نہ ہو سکی بلکہ الٹا اے این پی دور حکومت کے پراجیکٹس ان کی نظروں میں کھٹکتے ھیں اور اپنی خفت مٹانے کے لیے عقل سے عاری فیصلے کر رھی ھے۔صدرالدین مروت نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ متذکرہ اقدام فوری طور پر واپس لیکر عوام کی غیض و غضب کا امتحان نہ لے