پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر امیرحیدرخان ہوتی نے کہا ہے وہ سلیکٹڈ حکومت نہیں سلیکٹرز سے پوچھنا چاہتے ہیں کہ وہ اپنے فیصلے سے مطمئن ہیں؟کرسی پر بیٹھے ہوئے حکمرانوں کو پتہ بھی نہیں کہ کل وہ ناشتہ کرینگے تو ان کی حکومت ہوگی یا نہیں۔،ملک میں اس وقت بے یقینی کی صورتحال ہے،کسی کو بھی یہ اندازہ نہیں ہورہا کہ کل کیا ہونے جارہا ہے۔مردان بخشالی میں ڈاکٹرشوکت جمال امیرزادہ کی شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے امیرحیدرخان ہوتی نے کہا کہ امیر زادہ خان پیدائشی خدائی خدمتگار ہے،ہمیں اس خاندان اور امیر زادہ خان کی کردار پر فخر ہے،اے این پی ورکرز کو بتانا چاہتا ہوں کہ صوبہ بھر میں نئے نئے شمولیتیں ہونگی،ہمارے رابطے ہوچکے ہیں اور کئی رابطے جاری ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر آج بھی الیکشن ہوا اور اس میں خلائی مخلوق کا عمل دخل نہیں رہا تو اے این پی اس صوبے کی واحد حکمران جماعت ہوگی۔ہم یہ یقینی بنائیں گے کہ آئندہ الیکشن میں خلائی مخلوق کا عمل دخل نہیں ہوگا۔اپنے سلیکٹرز کیلئے بھی سلیکٹڈ ایک نوٹیفکیشن تک صحیح طریقے سے جاری نہ کرسکے۔ اے این پی کے مرکزی سینئر نائب صدر اور سابق وزیراعلیٰ کا کہنا تھا کہ مہنگائی آسمان سے باتیں کررہی ہے،ہم نے بھرا ہوا صوبائی خزانہ چھوڑا تھا آج صوبہ قرضوں پر چل رہا ہے،زندگی کا ہر مکتبہ فکر احتجاج کررہا ہے، تاجر، طالبعلم، وکلا، ڈاکٹرز، اساتذہ سب کے سب احتجاج پر ہیں، امیرحیدر خان ہوتی نے کہا کہ ایسا وقت آنے والا ہے کہ میرے وہ بچے بھی جلد احتجاج کرینگے جو سونامی کے نام پر دھوکہ کھا گئے تھے،آج پاکستان بین الاقوامی سطح پر تنہا ہورہا ہے، مسلمان ممالک ہندوستان کا ساتھ دے رہے ہیں،ہم اقوام متحدہ میں ہندوستان کے خلاف ایک قرارداد منظور نہیں کرسکتے۔ امیرحیدر خان ہوتی کا کہنا تھا کہ الیکشن کمیشن آج سے مفلوج ہوگیا ہے کیونکہ پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس سے بچنا چاہتی ہے کیونکہ اس کیس میں پی ٹی آئی کا دھڑن تختہ ہوجائیگا۔لوگوں کی تلاشی لینے والا آج اپنی تلاشی سے بھاگ رہا ہے۔احتساب کے دوہرے قانون سے متعلق امیرحیدرخان ہوتی نے کہا کہ آصف علی زرداری کی بہن کو جیل میں ڈالا جاتا ہے،نواز شریف کی بیٹی کو بغض نواز میں پابندسلاسل کیا جارہا ہے لیکن ریاست مدینہ میں علیمہ خانم دھندناتی پھر رہی ہے۔ کوئی ان سے پوچھنے والا نہیں کہ سلائی مشینوں سے علیمہ خانم کیسے ارب پتی بن گئی