پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے کہا ہے کہ ایل آر ایچ میں میڈیکل الائیڈ یونٹ صوبے کے عوام اور بالخصوص پشاوریوں کیلئے اے این پی کا تحفہ ہے،مذکورہ منصوبہ دس سال پہلے اُس وقت کے وزیراعلیٰ امیر حیدر خان ہوتی اور شہید بشیر احمد بلور نے شروع کیا تھا جو حکومت کی غفلت اور عدم دلچسپی کی وجہ سے تاحال مکمل نہ ہوسکا اور اُس کے باوجود بھی نامکمل منصوبے کو عوام کیلئے کھول دیا گیا ہے جو تعجب خیز ہے۔ باچا خان مرکز پشاور سے جاری بیان میں ثمر ہارون بلور نے کہا کہ تقریبا دس سال پہلے اے این پی نے اپنے دور حکومت میں ایل آر ایچ کے اندر میڈیکل الائیڈ یونٹ کے قیام کا فیصلہ کیا تھا اور اُس وقت اس منصوبے کیلئے خطیر رقم بھی جاری کی جاچکی تھی لیکن صوبے میں پی ٹی آئی حکومت آنے کے بعد مذکورہ منصوبہ پس پشت ڈالا گیا تاکہ صوبے کے عوام یہ بھول جائیں کہ اے این پی نے اُن کیلئے ایسا منصوبہ شروع کیا تھا،اب تبدیلی سرکار اُس منصوبے کی اگلے سال افتتاح کرنے جارہی ہے اورموجودہ وقت میں عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کیلئے نامکمل عمارت اور سہولیات کے ساتھ یونٹ عوام کیلئے کھول دیا گیا ہے،اس کے ساتھ ساتھ وزیراعظم عمران خان ایک بار پھر پرائے منصوبے پر اپنی تختی لگانے کی تیاریوں میں مصروف عمل ہے۔ثمر ہارون بلور نے کہا کہ یہ منصوبہ جس وقت شروع کیا گیا تھا اس منصوبے میں 8منزلہ عمارت شامل تھی جبکہ اب وزیراعظم پانچ منزلہ عمارت کے ساتھ اس منصوبے کا افتتاح کرینگے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوام اب بہت ہوشیار ہوچکے ہیں اور وہ جانتے ہیں کہ ایل آر ایچ میں اتنا بڑا منصوبہ کس کے دور حکومت میں شروع کیا گیا تھا اور عوام یہ حقیقت بھی جان چکی ہے کہ تبدیلی سرکار گزشتہ چھ سالہ دور حکومت میں محکمہ صحت کے اندر ایک روپے کا ترقیاتی کام بھی نہیں کرسکی ہے۔