پشاور(پ ر)سابق وزیر اعلیٰ اور عوامی نشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر امیر حیدر خان ہوتی نے کہا ہے کہ سلیکٹیڈ حکومت دو اھم اداروں کے درمیان کشمکش میں منصفی کی بجائے بطور فریق کردار ادا کررہا ہے جس سے ملک و قوم مزید مسائل کا شکار ہوگا۔ ایک فون پر مسلم برداری کے کانفرس میں عدم شرکت سے پاکستان بین القوامی سطح پر تنہائی کا شکار ہوگیا ہے،سیلکٹڈ عمران خان وہاں بھی فریق بن گئے ہیں۔ الیکشن سے پہلے مشرف کو سخت سزاء کا مطالبہ اور سزاء کے بعد ان سے ھمدردی کئی سوالات کو جنم دے رہا ہے۔ وہ جمعہ کی شام ضلع مردان کے قدیمی گاوں گوجر گھڑی میں ایک بڑے شمولیتی جلسے سے خطاب کررہے تھے۔ جس میں مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے بااثر شخصیات شہر یار خان،نواز خان، مراد خان، باور ماما، فدا محمد، زاہد خان،وصال خان، زبیر خان،طوطی خان اور دیگر نے اپنے اپنے خاندانوں اور ساتھیوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا۔ جلسے سے اے این پی ضلع مردان کے صدر حاجی لطیف الرحمان،شہریار خان،صدر حاجی نورباچہ، بلال خان،ساجدعلی اور جمیل خان نے بھی خطاب کیا۔اس موقع پر سابق ایم این اے/ سابق ناظم مردان حمایت اللہ مایار، چیمبر آف کامرس مردان کے صدر حاجی اویس خان، صدر سبزعلی خان، ناظم منصور خان، بختیار حسن،تحصیل جنرل سیکرٹری سہراب اکاخیل، ڈپٹی سیکرٹری آختر زمان،محمد جمیل،ماجد خان،حاجی ارشد خان،محمد اسلام منظر حاجی شیربازخان،عابد خان کے علاوہ دیگر عہدیدار بھی موجود تھے۔امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ ہمیں اس سوچ سے اختلاف ہے کہ پاکستان پنجاب اور پنجاب پاکستان ہے،اس تاثر سے ایک بار پہلے بھی پاکستان ٹوٹ چکا ہے۔ انھوں نے کہا کہ مہنگائی اور معاشی بحرانی کیفیت نے قرضوں پر قرضے 10 ہزار ارب ڈالر تک پہنچادیئے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ ٹماٹر کے نرخوں نے ڈالر اور پٹرول کو بھی مات دے دی ہے۔ناقص طرز حکمرانی کی وجہ سے روزگار پیدا کرنے کی بجائے بے روزگاری میں خطرناک اضافہ لمحہ فکریہ ہے۔سیلکٹڈ حکومت کی اندرونی اور بیرونی تمام پالسیاں ناکام ہو چکی ہے، مخصوص قوتوں کے مفادات کیلئے جعلی حکمرانوں کی اصلیت سے پوری دنیا باخبر ہوچکی ہے۔ ایران، ترکی اور ملائشیاء نے کشمیر کے مسلئے پر ھمارے موقف کی حمایت کی تھی اور اس کے جواب میں ھم نے کیا کیا؟ انھوں نے واضح کیا کہ سال 2018 کے جنات کے فیصلوں سے قائم جعلی حکومت لاکھ کوشیش کریں کبھی بھی اپنے آپکو قوم اور بین القوامی دنیا کا حقیقی نمائندہ ثابت نہیں کرسکتے۔ انھوں نے کہا کہ ڈیکٹیٹر مشرف کے ہاتھ پختونوں کے خون سے رنگے ہوئے ہیں۔ اللہ پاک نے اسے اپنی گرفت میں لیا ہے۔ جو عبرتناک انجام سے دوچار ہوگا