پشاور(پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پی ٹی آئی آمر ضیاء الحق کے باقیات کا کردار ادا کررہی ہے اور اپنے حقوق کیلئے مارچ کرنیوالے طلبہ کیخلاف مقدمات کا اندراج اس بات کا ثبوت ہے کہ سلیکٹڈ حکمران جمہوریت کیلئے مزید خطرہ بن چکے ہیں۔ باچاخان مرکز پشاور سے جاری بیان میں اے این پی کے صوبائی صدر نے لاہور انتظامیہ کی جانب سے مارچ کے آرگنائزرز،اساتذہ اور بالخصوص مشال خان کے والد اقبال لالا پر ایف آئی آر کے اندراج کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایسے فسطائی ہتھکنڈے جمہوریت کے لئے زہر قاتل ہیں ،طلبہ یونین سیاست کی نرسریاں ہیں،اگر جامعات اور کالجز میں انکی سیاسی تربیت نہیں ہوگی تو پاکستان میں لیڈرشپ کہاں سے آئیگی؟ یہی وہ پلیٹ فار م ہے جہاں سے سیاسی قیادت پروان چڑھتی ہے’ انہوں نے کہا کہ ریاست طلبہ کے جائز مسائل حل کرنے کی بجائے ان کو دیوار سے لگارہی ہے جس کے بھیانک نتائج نکلیںگے’ ایمل ولی خان نے حکومتی دوغلی پالیسی و بیانات پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ وفاقی و صوبائی وزراء اورپنجاب کے گورنر تک طلبہ کے موقف کو درست تسلیم کرتے ہیں،طلبہ یونین کی حمایت میں بیانات دیتے ہیں لیکن دوسری جانب کسی کی اشاروں پر انتظامیہ یہی مطالبہ کرنے والے طلبہ پر ایف آئی آر درج کرتی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ڈکٹیٹرضیاء الحق نے اپنے تاریک دورمیں طلبہ یونین پرپابندی لگائی تھی تاکہ جمہوریت کی نرسری ختم ہو، اب تحریک انصاف جنرل ضیاء الحق کی باقیات کی رکھوالی کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ ایمل ولی خان نے طلبہ یونین کی بھرپور حمایت کرتے ہوئے حکومت سے مطالبہ کیاکہ طلبہ یونین پرپابندی اٹھائی جائے اور معصوم طلبہ کے خلاف درج ایف آئی آر واپس لی جائے۔