پشاور( پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیارولی خان نے نومنتخب افغان صدر ڈاکٹر اشرف غنی کو دوبارہ صدارتی انتخابات میں کامیابی پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا ہے کہ ان کا انتخاب افغان عوام کا انکی ٹیم پر اعتماد کا مظہر ہے۔ سربراہ اے این پی نے اپنے تہنیتی پیغام میں ان کی پوری ٹیم کو مبارکباد پیش کی اور کہا کہ جنگ زدہ افغانستان میں جمہوری عمل کا تسلسل دیرپا امن کے قیام کی طرف اہم قدم ہے، عوامی رائے کا احترام ہی امن و آشتی اور جمہوریت کیلئے امید کی کرن ہے۔ انہوں نے دیگر صدارتی امیدواروں پر زور دیا کہ اعتراضات کی بجائے افغانستان کی ترقی کیلئے ملکر کام کرنے اور امن کے قیام کیلئے اپنا کردار ادا کریں اور امید ظاہر کی کہ نئی قیادت افغان امن عمل میں مزید توانا کردار ادا کرے گی۔ اسفندیارولی خان نے افغان عوام کو بھی مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ دھمکیوں کے باوجود افغان عوام کا بڑی تعداد میں ووٹ کیلئے نکلنا لائق تحسین ہے جنہوں نے کسی بھی دھمکی کی پرواہ کیے بغیر اپنی قیادت کا انتخاب کیا۔ اب ضرورت اس امر کی ہے کہ افغانستان کی ترقی و خوشحالی کیلئے نئے سفر کا آغاز کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ امید ہے نئی افغان قیادت پاکستان سمیت دیگر ہمسایہ ممالک کے ساتھ تعلقات کی بہتری کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں تاکہ ہمسایہ ممالک کے درمیان پائی جانیوالی غلط فہمیوں کو دور کیا جاسکے۔افغان امن عمل بارے اسفندیارولی خان کا کہنا تھا کہ چالیس سالہ جنگ کے خاتمے کیلئے تمام فریقین کو ایک میز پر لانا ہوگا، چین ،روس اور امریکا ضامن جبکہ پاکستان ثالث کا حقیقی کردار ادا کریں تو اس پورے خطے میں امن کا قیام امن ہوسکتا ہے۔