پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبے کے سینئر ڈاکٹرز حکومتی فیصلوں کی وجہ سے مستعفی ہو رہے ہیں،محکمہ صحت کے ہر کیڈر کے ملازمین سراپا احتجاج ہیں اور حکومت خاموش تماشائی بنی ہوئی ہے، خیبر پختونخوا اسمبلی کے سامنے پیرا میڈیکل سٹاف کے بہت بڑے احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ صوبے کے طول و عرض میں صوبے کے سینئر ترین ڈاکٹر مستعفی ہو رہے ہیں جو لمحہ فکریہ ہے،حکومتی فیصلوں اور محکمہ صحت کو ٹھیکیداری نظام کے تحت چلانے کی وجہ سے نہ صرف صوبے کے غریب مریضوں کی مشکلات میں اضافہ ہوتا جا رہا ہے بلکہ ڈاکٹر استعفوں اور تمام کیڈر کے ملازمین مظاہروں پر مجبور ہیں،سردار بابک نے کہا کہ ہسپتالوں میں ادویات ناپید ہو چکی ہیں اور تبدیلی سرکار کی حکومت میں مریض علاج کیلئے در در کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ صوبہ تباہی کے دہانے پر کھڑا ہے اور حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آ رہی ، معلوم نہیں کہ حکومت میں اختیار کس کے پاس ہے اور حکومتی ذمہ دار کون ہیں؟ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت میں عوام کے مسائل میں بے تحاشا اضافہ ہوا ہے اور تمام طبقات کے لوگ ذہنی مریض بن چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ ہیلتھ کیئر کمیشن روزانہ کی بنیاد پر لاکھوں روپے جرمانے وصول کر رہے ہیں۔