پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبہ بدترین مالی بحران کا شکار ہے جبکہ صوبائی حکومت وفاق سے بجلی کے خالص منافع اور دیگر واجبات کے حصول میں غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کر رہی ہے، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ صوبے کے اپنے محاصل میں کمی اور بیرونی امداد کی بندش لمحہ فکریہ ہے، ایک سال گزرنے کے باوجود صوبے کے تمام اضلاع میں جاری ترقیاتی کاموں کیلئے رقم کا نہ ہونا اور آئے روز اشیائے ضروریہ کی قیمتوں میں اضافے کی وجہ سے جرائم میں اضافہ ہو رہا ہے،صوبائی حکومت کی عدم دلچسپی اور غیر ذمہ دارانہ رویے نے صوبے کے عوام کے مسائل میں بے پناہ اضافہ کر دیا ہے، انہوں نے کہا کہ صوبے کے ذرائع آمدن محدود ہو کر رہ گئے ہیں، پی ٹی آئی کے چھ سالہ دور حکومت نے غریب لوگوں کی چیخیں نکال دی ہیں،صوبے کے محدود وسائل کو سیاسی اور حکومتی بنیادوں پر تقسیم کرنے سے صوبے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے، سردار حسین بابک نے کہا کہ مرکز اور صوبے میں ایک ہی جماعت کی حکومت ہونے کے باوجود صوبے کے ساتھ زیادتی قابل افسوس ہے، اور اس پر مرکزی حکومت نے امتیازی سلوک کرتے ہوئے صوبے میں کوئی ایک میگا پراجیکٹ شروع نہیں کیا جبکہ اس کے برعکس گزشتہ مرکزی حکومت کے منصوبوں پر اپنی تختیاں لگانے سے عوام مرعوب نہیں ہونگے۔