چمن(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر و صوبائی پارلیمانی لیڈر اصغرخان اچکزئی نے گزشتہ روز چمن میں حاجی فیض اللہ خان نو رزئی حاجی بصیر نورزئی اور حاجی آمین اللہ نورزئی کے رہائش گاہوں پر چھاپے اور گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا گیا کہ پرامن قبائلی علاقے میں رات کے اندھیرے میں چھاپے چادر اور چاردیواری کی پامالی کسی صورت جائز قرار نہیں دیا جا سکتا اس طرح کے اوچھے ہتھکنڈے پرامن ماحول کو خراب کرنے کی دانستہ کوشش ہے ضلعی واعلی انتظامیہ کے ساتھ مسلسل رابطے کے نتیجے میں بے گناہ افراد کی باعزت رہائی ممکن ہوئی اس تمام تر صورتحال میں انتظامیہ کی بروقت مثبت کرداراور نورزئی قبائل کی پرامن احتجاج اور بعد ازاں احتجاج ختم کرنا قابل ستائش عمل ہے عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر و صوبائی پارلیمانی لیڈر اصغرخان اچکزئی نے مزید کہا کہ چمن کے پرامن ماحول کو خراب کرنے کی کسی صورت اجازت نہیں دے سکتے۔ کسی کے خلاف کوئی مقدمہ ہو بھی تو یہ کام رات کے اندھیرے میں چھاپوں کے بجائے گفت وشنید اور دن کے وقت بھی ہوسکتا تھا، اس طرح کے اقدامات سے غلط فہمیاں جنم لیتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کل کا واقعہ کسی صورت جائز نہیں اس سلسلے میں اعلی حکام اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مسلسل رابطے کے نتیجے میں قبائلی رہنماوں کی باعزت رہائی ممکن بنادی گئی۔ انتظامیہ کا مثبت کردار قابل ستائش ہے اور بے گناہ افراد کی رہائی سے قبائل میں پائی جانیوالی بے چینی میں کمی واقع ہوئی ہے۔ انہوں نے چمن کے عوام اور نورزئی قبائل کا پر امن طور پر احتجاج ختم کرنے کو بھی قابل داد قرار دیتے ہوئے امید ظاہر کی کہ چمن کے غیور عوام اور سول سوسائٹی شہر کے پرامن ماحول کے قیام کیلئے ذمہ دارانہ کردار آئندہ بھی ادا کرتے رہینگے