عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی کیلئے قانون سازی نا گزیر ہے لیکن حکومت نئے بلدیاتی نظام کیلئے قانون سازی میں جلد بازی سے کام لے رہی ہے ،خیبر پختونخوا سمبلی میں بلدیاتی نظام ترمیمی بل کے حوالے سے بحث کے دوران انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے مقامی حکومتوں کے قانون میں ضلعی حکومت کا خاتمہ ناقابل فہم اور غیر آئینی ہے،نچلی سطح پر غیر جماعتی بنیادوں پر انتخابات کرانا سیاسی جماعتوں پر پابندی لگانے کے مترادف ہے ، انہوں نے کہا کہ جمہوریت کی مضبوطی کیلئے جماعتی بنیادوں پر بلدیاتی انتخابات نا گزیر ہیں، حکومت ایک مضبوط ،مو¿ثر اور جمہوری بلدیاتی نظام کی تیاری میں تمام سیاسی جماعتوں کی مشاورت کو نظر انداز کر رہی ہے جو کہ صوبے کیلئے نقصان دہ ہے، انہوں نے کہا کہ بلدیاتی نظام جماعتی بنیادوں پر اور ضلعی حکومت کے بغیر ادھورا ، نا مکمل اور غیر آئینی ہو گا،انہوں نے کہا کہ حکومت اپوزیشن کی تجاویز کو بلڈوز کرنے سے گریز اور سولو فائٹ سے اجتناب کریں، انہوں نے کہا کہ حکومت نے اپوزیشن کے جائز اور آئینی تجاویز کو شامل نہ کیا تو مجبوراً صوبے کے عظیم تر مفاد میں عدالت کا رخ کریں گے۔