عوامی نیشنل پارٹی خیبر پختونخوا کی نئی کابینہ کا اعلان کر دیا گیا، ایمل ولی خان بلا مقابلہ صوبائی صدر منتخب ہو گئے،سردار حسین بابک مسلسل دوسری بارصوبائی جنرل سیکرٹری چن لئے گئے، اس سلسلے میں اے این پی کی صوبائی کونسل کا اجلاس مرکزی الیکشن کمیشن کی زیر نگرانی باچا خان مرکز میں منعقد ہوا ،اجلاس میں صوبہ بھر سے کونسل ممبران نے بھرپور شرکت کی اور آئندہ چار سال کیلئے صوبائی کابینہ منتخب کی گئی، مرکزی الیکشن کمیشن کے مطابق ایمل ولی خان صوبہ خیبر پختونخوا کے بلا مقابلہ صدر منتخب کر لئے گئے ، جبکہ سردار حسین بابک279ووٹ لے کرصوبائی جنرل سیکرٹری منتخب ہو گئے،مخالف امیدوار عمران آفریدی نے179ووٹ حاصل کئے، کابینہ کے دیگر بلا مقابلہ منتخب ممبران میں نائب صدر خلیل عباس خٹک، نائب صدر زنانہ شازیہ اورنگزیب ،نائب صدر زنانہ دوم خدیجہ سردار،جائنٹ سیکرٹری زنانہ اول شہناز راجہ، جائنٹ سیکرٹری زنانہ دوم شاہین ضمیر، صوبائی ترجمان صدر الدین مروت ،صوبائی سیکرٹری مالیات مختیار خان ایڈوکیٹ،سیکرٹری ثقافت نثار خان ،نائب صدر فاٹا شاہی خان شیرانی،ڈپٹی جنرل سیکرٹری شیر شاہ خان ،ایڈیشنل جنرل سیکرٹری خورشید خٹک، جبکہ سیکرٹری اقلیتی امور آصف بھٹی مسلسل دوسری بار بلا مقابلہ منتخب کر لئے گئے۔اسی طرح جن عہدوں پر پولنگ کا انعقاد ہوا ان کے نتیجے میں صوبائی جنرل سیکرٹری کے امیدوار سردار حسین بابک نے279ووٹ حاصل کئے اور مخالف امیدوار عمران آفریدی کو179ووٹ ملے، جائنٹ سیکرٹری کیلئے فیصل زیب خان نے 385ووٹ حاصل کئے جبکہ ان کے مخالف امیدوار کو صرف 50ووٹ مل سکے، اسی طرح ثاقب اللہ چمکنی 268 ووٹ لے کر نائب صدر دوم منتخب ہو گئے ان کے مد مقابل امیدوار قیصر ولی کو176ووٹ مل سکے، سینئر نائب صدر کیلئے بھی دو امیدواروں میں مقابلہ ہوا جس میں خوشدل خان ایڈوکیٹ 300ووٹ لے کر بھاری اکثریت سے کامیاب ہوئے ، مدمقابل جاوید یوسفزئی کو 141ووٹ مل سکے۔