پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ اٹھارویں ترمیم ملک کی بقا کی ضامن ہے اور صوبائی خودمختاری نہ ہونے کی وجہ سے پہلے ہے ملک کے دو حصے ہو چکے ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈسٹرکٹ بار روم میں نو منتخب کابینہ کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کیا ، میاں افتخار حسین نے پشاور بار کے نو منتخب صدر اور دیگر ممبران کو ان کی کامیابی پر مبارکباد دی اور کہا کہ ملگری وکیلان کی صوبہ بھر میں کامیابی تعلیم یافتہ طبقے کی جانب سے اے این پی کی کامیاب پالیسیوں پر اعتماد کا اظہار ہے ،انہوں نے کہا کہ منتخب ہونے والوں پر وکلاء برادری نے اپنے بھرپور اعتماد کا اظہار کیا ہے اور اب یہ ان کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ وکلاء برادری کے حقوق کے تحفظ اور حق و انصاف کی پاسداری کرتے ہوئے جمہوریت کی بالادستی کیلئے اپنی تمام تر توانائیاں صرف کریں۔اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم2010میں اس وقت کی حکومت نے تمام سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لے کر پاس کرائی لیکن بدقسمتی سے آج کچھ قوتیں اس کی مخالفت میں مصروف ہیں جبکہ عمران خان کو بالخصوص اٹھارویں ترمیم کو رول بیک کرنے کی غرض سے اقتدار دیاگیا،قبل ازیں آصف زرداری بھی اس خدشات کا اظہار کر چکے تھے کہ ان پراٹھارویں ترمیم کے خاتمے کیلئے کافی دباؤ ڈالا گیا، انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم سے پہلے صوبائی خودمختاری نہ ہونے سے ملک ٹوٹ گیا اور آج کی حکومت پھر وہی غلطی دہرانے کی کوشش کر رہی ہے،،انہوں نے کہا کہ پاکستان میں مضبوط مرکزی کی سیاست ناکام ہو چکی ہے اور اب ملک کی بقا کیلئے صوبوں کا مضبوط ہونا انتہائی ضروری ہے جس کی موجودہ حکمران مخالفت کر رہے ہیں لیکن اب اٹھارویں ترمیم کسی طور واپس نہیں ہونے دیں گے۔میاں افتخار نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کا تحفظ صرف سیاسی جماعتوں کی ذمہ داری نہیں بلکہ بار اور بنچ نے جس طرح ماضی میں جمہوریت کی بقا اور مضبوطی کیلئے اہم کردار ادا کیا اسی طرح آج بھی اتھارویں ترمیم کے تحفظ کیلئے اپنا بنیادی کردار ادا کریں۔

مہنگائی کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ جب سے تحریک انصاف کی حکومت آئی ہے عوام کو مہنگائی کے تحفے مل رہے ہیں،پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرکے غریب عوام کو مہنگائی کاایک اورتحفہ دیدیا گیا عمران خان غریب عوام کی غربت ،پسماندگی ختم کرنے کی بجائے غریبوں کو ہی ختم کرنے کے درپے ہیں،انہوں نے کہا کہ مسلسل عوام دشمن اقدامات سے عوام کا جینا محال ہوچکا ہے پیٹرولیم مصنوعات میں اضافے سے مہنگائی کا شدید طوفان آئے گاکمر توڑ مہنگائی کو بر داشت کرنا نا ممکن ہوجائے گا، سلیکٹڈحکومت بے حال عوام پر مصائب کے کوڑے برسا رہی ہے حکومتی نااہلی ،بد اانتظامی کی سزا عوام بھگت رہے ہیں، انہوں نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ فوری واپس لینے کا مطالبہ کیا اور کہا کہ عوام کو خودکشیوں پر مجبور کرنے سے گریز کیا جائے ،انہوں نے آخر میں ایک بار پھر وکلا برادری کی نو منتخب کابینہ کو مبارکباد دی اور اس امید کا اظہار کیا کہ وہ حق و انصاف کی بالادستی اور عوام کی انصاف تک رسائی ممکن بنانے کیلئے اپنی توانائیاں صرف کریں گے۔