پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ مسترد کر تے ہوئے واضح کیا ہے کہ سلیکٹڈ حکومت عوام دشمن پالیسیوں پر عمل پیرا ہے اور ملک کو تباہی کی طرف لے جانے والے جلد سفر رخصت پر روانہ ہونے والے ہیں، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ حکومت پٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ واپس لے، مہنگائی کے سونامی نے پاکستانی عوام کا جینا مشکل کردیاہے، انہوں نے کہا حیرت ہے کہ قیمتوں میں اضافے کے آرڈر پر دستخط کرتے ہوئے عمران خان کے ہاتھ کیوں نہیں کانپتے؟ ایمل ولی خان نے کہا کہ حکومت نے عوام پر پٹرول بم گرا دیا ہے، جعلی مینڈیٹ پر آئی حکومت قوم سے ووٹ نہ دینے کا انتقام لے رہی ہے، کہاں ہیں وہ وعدے جوانتخابات سے قبل کئے گئے تھے،انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت کو عوام کی کھال اتارنے کا ٹاسک حوالے کیا گیا ہے لیکن نااہل اور نالائق سلیکٹڈ اعظم کا وقت رخصت قریب ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی نااہلی اور نالائقی کا بوجھ عوام پر ڈال رہی ہے اور حکمران عوام کو ریلیف دینے کی بجائے تکلیف دے رہے ہیں، اسٹیٹ بینک اور ایف بی آر سربراہان ہٹا کر ادارے آئی ایم ایف کی جھولی میں ڈال دیے گئے ہیں جس کے بعد کابینہ کی حیثیت ختم ہوچکی ہے، ایمل ولی نے کہا کہ مسلط کیے گئے حکمران ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے اقتدار چھوڑ دیں، پیٹرول کی قیمت 62 روپے لیٹر تسلیم کی گئی اور اب 118 روپے لیٹر فروخت کر کے کس کی جیبیں گرم کی جا رہی ہیں، حکمران بیرونی قرضوں کا بوجھ بذریعہ ٹیکس اور مہنگائی عوام پر ڈالنے سے باز رہیں۔انہوں نے کہا کہ تیزی سے گرتی معیشت کو نہ سنبھالا تو ملک سنگین تباہی سے دوچار ہوجائے گا، عوام کی قوت خرید جواب دے گئی ہے،جبکہ حکومتی غیر سنجیدگی کے باعث کاروبار اور روزگار تباہ اور تجارتی سرگرمیاں ختم ہوچکی ہیں۔