پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی نے گیس کی قیمتوں میں ممکنہ اور آٹے کی قیمتوں میں ہوشربا اضافے پر انتہائی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت عوام میں اشتعال انگیزی کو بڑھا رہی ہے اور اپنی نااہلی و ناکامی کا نزلہ عوام پر گرانا چاہتی ہے،غریب عوام مہنگائی کے بوجھ تلے پہلے ہی دبے ہوئے ہیں، مزید مہنگائی برداشت نہیں کر سکیں گے، اے این پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے اپنے ایک بیان میں گیس قیمتوں میں 200فیصد اضافے کی تجویز کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ قیمتوں میں مزید اضافے سے عوام پر 220ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا، جبکہ آٹے کی قیمتوں میں خود ساختہ اضافہ بھی حکمرانوں کی نا اہلی ہے،غریب عوام کا چولہا مہنگائی سے پہلے ہی بجھ چکا ہے، حکومت ٹیکس جمع کرنے میں ناکامی کا بدلہ عوام سے لے رہی ہے،ریلیف کے نام پر آنیوالی حکومت نے غریبوں سے ریلیف چھین لیا، حکومتی دعوؤں کی قلعی کھل گئی۔انہوں نے مزید کہا کہ اے این پی گیس کی قیمتوں میں اضافے کا فیصلہ مسترد کرتی ہے، پی ٹی آئی حکومت کے اقدام نے صنعت و صنعتی صارفین کو بھی مشکل میں ڈال دیا ہے۔
عام صارف سمیت پاور پلانٹس، کھاد اور سیمنٹ بنانے والی فیکٹریوں کیلئے گیس قیمتوں میں اضافہ ملک کے دیوالیہ ہونے کا ثبوت ہے،قیمتوں میں مزید اضافے سے پہلے سلیب کے صارفین کا ماہانہ بل 285 روپے سے بڑھ کر 422 روپے ہو جائے گا، دوسرے سلیب کے گیس صارفین کا ماہانہ بل 572روپے سے بڑھ کر1,219روپے، تیسرے سلیب کے گیس صارفین کا ماہانہ بل 2,305 روپے سے 4,009 روپے ہو جائے گا، چوتھے سلیب کے گیس صارفین کا ماہانہ بل3,589 روپے سے بڑھ کر 7,995 روپے اور اسی طرح پانچویں سلیب کے گیس صارفین کا ماہانہ بل 13,508 روپے سے بڑھ کر14,373 روپے ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ نیازی کی نالائقی نے معیشت کو ایشیا کی بدترین معیشت بنا دیا، اب بھی وقت ہے مسلط وزیر اعظم اخلاقی طور پر قوم سے معافی مانگ کر گھر چلے جائیں،
سردار بابک نے کہا کہ حالیہ بجٹ میں ٹیکسوں کی بھرمار اور مہنگائی کے طوفان نے پشاور کے شہریوں کے لئے روٹی خریدنا بھی مشکل بنا دیا، آٹے کی بوری کی قیمت میں 600 روپے کا مزید اضافہ عوام میں خودکشیوں کے رجحان میں اضافہ کرے گا،انتظامیہ غائب اور شہری ذخیرہ اندوزوں اور گراں فروشوں کے رحم و کرم پر ہیں۔انہوں نے کہا کہ چینی و گھی کے بعد اب آٹا بھی عوام کی دسترس سے دور ہو چکا ہے، مہنگائی کی موجودہ صورتحال دیکھ کر لگتا ہے مسلط وزیر اعظم آئی ایم ایف کے منشی کی صورت میں کسی غیر ملکی ایجنڈے پر گامزن ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت مہنگائی کا بے قابو جن قابو کرے اور فوری طور پر قیمتوں میں کمی کر کے عوام کو ریلیف دینے کا اعلان کرے۔