پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ نئے قبائلی اضلاع میں صوبائی اسمبلی کی انتخابی مہم منظم انداز میں چلائیں گے، حکومت بوکھلاہٹ کا شکار ہے،وزیرستان میں دفعہ144کا خاتمہ ناگزیر ہے، انتخابی مہم کے دوران دفعہ144کا نفاذ دھاندلی کی کوشش ہے،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع میں غیر جانبدارانہ اور آزادانہ انتخابات کو یقینی بنانا الیکشن کمیشن کی ذمہ داری ہے،انہوں نے ایک بار پھر اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ وفاقی بجٹ میں قبائلی اضلاع کے تباہ حال انفراسٹرکچر اور لوگوں کی ذاتی املاک کیلئے رقم مختص نہ کرنا انتہائی زیادتی ہے، انہوں نے مطالبہ دہرایا کہ قبائلی اضلاع میں موبائل و انٹر نیٹ کی سہولت بحال کی جائے، سردار بابک نے کہا کہ اے این پی کے صوبائی صدر نے پارٹی کی تمام ذیلی تنظیموں کو قبائلی اضلاع کی انتخابی مہم میں بھرپور شرکت اور امیدواروں کی کامیابی کیلئے انتھک محنت کی ہدایات جاری کر دی ہیں انہوں نے قبائلی عوام سے اپیل کی کہ اپنے روشن مستقبل کیلئے اے این پی کے امیدواروں کو کامیاب بنائیں کیونکہ پختونوں کے حقوق اور امن کی بحالی کیلئے اے این پی کی قربانیاں و جدوجہد تاریخ ساز ہیں، پختون نوجوان پارلیمانی محاذ فتح کرنے کیلئے تمام توانائیاں بروئے کار لائیں،انہوں نے کہا کہ مرکزی صدر اسفندیار ولی خان کی ہدایت پر صوبائی صدر نے قبائلی اضلاع میں امیدواروں کی کامیابی کیلئے تمام اضلاع میں مرکزی و صوبائی رہنماؤں پر مشتمل کمیٹیاں بھی تشکیل دے دی ہیں اور ان سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ فوری طور پر انتخابی مہم پولنگ ڈے تک جاری رکھیں۔تشکیل کردہ کمیٹیوں کی تفصیل درج ذیل ہے۔
ضلع باجوڑ کیلئے حاجی غلام احمد بلور کی سربراہی میں قائم کردہ کمیٹی کے ممبران میں حاجی بہادر خان،شاہی سید،محمد کریم بابک،شاہ نصیر خان،ملک محمد زیب۔بریگیڈیئر(ر) سلیم خان شامل ہیں، اسی طرح ضلع خیبر کیلئے کمیٹی میں ثاقب اللہ چمکنی ،عمران آفریدی، لطیف آفریدی، سلیم خان ایڈوکیٹ،مختیار خان،خلیل عباس شامل ہیں،ضلع مہمند کیلئے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین کی سربراہی میں تشکیل کردہ کمیٹی میں ایوب خان اشاڑے، شیر شاہ خان، حمایت اللہ مایار، قاسم علی خان چارسدہ کا نام شامل کیا گیا ہے جبکہ سابقہ ایف آر پشاور کیلئے ملک حضرت گل، صلاح الدین خان اور خوشدل خان ایڈوکیٹ کے نام فائنل کئے گئے۔ایف آر بنوں کی کمیٹی خورشید خٹک اور تیمور باز خان پر مشتمل ہو گی،سابقہ ایف آر ڈی آئی خان سیشاہی خان شیرانی،داؤد خان،سابقہ ایف آر کوہاٹ سے باچا گل،محمد ایوب خان آفریدی ، فیاض خان،سابقہ ایف آر لکی سے صدرالدین مروت اوریاسمین ضیا،جنوبی وزیرستان کیلئے حسین شاہ یوسفزئی،واجد علی خان،اشفاق خان ایڈوکیٹ، توصیف اعجاز یوسفزئ،،شمالی وزیرستان کیلئے حاجی ہدایت اللہ خان، نثار خان، ہارون خان،جمال خٹک جبکہ ضلع کرم کیلئے استقبال خان،خان نواب،حسین علی شاہ حسینی اور پیر حیدر علی شاہ پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دے دی گئیں۔