پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ قبائلی اضلاع میں ووٹ کی حفاظت یقینی بنائی جائے گی اور پختون دشمنوں کو عوامی مینڈیٹ پر ڈاکہ نہیں ڈالنے دیں گے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے107باڑہ میں اے این پی کے امیدوار صدیق چراغ آفریدی کی انتخابی مہم کے دوران جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا، ایمل ولی خان نے کہا کہ موجودہ دور انتہائی نازک ہے اور پختونوں میں شعور اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے، انہوں نے کہا کہ اے این پی پختونوں کو ایک پلیٹ فارم پر متحد کرنے تک چین سے نہیں بیٹھے گی، ہمارے اکابرین نے ہمیشہ اتحاد و اتفاق،قومی و ملکی مفاد میں بات کی لیکن ملک میں محب وطن ٹولے نے انہیں غدار جیسے ناموں سے نوازا،آج ریاست نے چند نام نہاد پختون اپنی جیب میں رکھے ہوئے ہیں جنہیں مظلوم و محکوم پختونوں کے زخموں پر نمک پاشی کیلئے استعمال کیا جا رہا ہے، ایمل ولی خان نے کہا کہ قبائلی عوام 70سال سے انگریز کے کالے قانون تلے زندگی گزارتے رہے جبکہ اے این پی نے ہر دور میں ان کی محرومیوں کے خاتمے کیلئے حتی الوسع کوششیں جاری رکھیں جس کے نتیجے میں انضمام ممکن ہوا تاہم آج بھی ریاست اور حکومت کی غیر سنجیدگی کے باعث ایف سی آر کا مکمل خاتمہ نہ ہو سکا،انہوں نے کہا کہ الیکشن میں کامیابی کے بعد قبائلی عوام کی محرومیوں کے خاتمے کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام کیا جائے گا، ملک کی مجموعی صورتحال کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ملک پر کرپٹ مافیا کا قبضہ ہے، گزشتہ11ماہ سے ملک میں احتساب کے نعرے لگ رہے ہیں لیکن اس نام نہاد احتساب کی آڑ میں سیاسی مخالفین کو نشانہ بنایا جا رہا ہے،انہوں نے کہا کہ سلیکٹڈ وزیر اعظم کا کھیل ختم ہونے کے قریب ہے،متحدہ اپوزیشن کی تحریک ٹرننگ پوائنٹ ثابت ہو گی، انہوں نے کہا کہ صوبے کے وسائل جس بری طرح سے لوٹے گئے نیب نے اس پر آنکھیں بند کر کے چوروں کو تحفط فراہم کیا،ایمل ولی خان نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ نے بیرونی ڈالرز کی بندش کے باعث سلیکٹڈ وزیر اعظم کو عوام کی کھال اتار کر پیسہ اکٹھا کرنے کا ٹاسک دے رکھا ہے، مرنے اور قربانی پر ٹیکس کی شرمناک مثال ملکی تاریخ میں نہیں ملتی،حکومت کو فارغ نہ کیا گیا تو صورتحال مزید تباہی کی طرف جائے گی، انہوں نے کہا کہ عمران خان ملک کیلئے سیکورٹی رسک ہے،کشکول کے خلاف آواز اٹھانے والا شخص آج دنیا کا سب سے بڑا بھکاری بن چکا ہے،ملک پر قرضوں کے بوجھ لاد دیئے گئے ہیں، انہوں نے کہا کہ نااہل اور سلیکٹڈ حکمرانوں سے قوم کو نجات دلانا ضروری ہے جس کیلئے 25جولائی سے حکومت مخالف تحریک کا آغاز ہو گا، ملک بچانے کیلئے متحدہ اپوزیشن متفق ہے،انہوں نے کہا کہ اے این پی نے روز اول سے قبائلی عوام کے حقوق کیلئے آواز اٹھائی اور انضمام کیلئے کوششیں کیں، قبائلی انتخابات میں کامیابی کے بعد محروم قبائلیوں کی ترقی اور بنیادی سہولیات کی فراہمی اولیں ترجیح ہوگی۔