پشاور(پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ ایل آر ایچ آڈٹ رپورٹ نے تبدیلی سرکار کا اصل چہرہ مزید واضح کردیا۔ٹھیکداروں کو عوامی ٹیکس کا پیسہ دیا گیا، اربوں روپے کی کرپشن کی گئی لیکن تبدیلی سرکار سورہی ہے۔

ن لیگ تحصیل ادینزئی کے صدرگل منیر خان ایڈوکیٹ اور پیپلزپارٹی یونین کونسل چکدرہ کے صد عطاء اللہ خان کی اے این پی میں شمولیتی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے اے این پی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا کہ اس سے پہلے کورونا اشتہارات ، فیس ماسک اور سینیٹائزر تک میں کرپشن کی گئی ۔وزیراعظم کے کزن نے صوبے کے سب سے بڑے ہسپتال کا بیڑا غرق کردیا ہے۔کپتان کے کزن امریکا میں بیٹھ کر صوبے کے صحت کے نظام کے ساتھ کھلواڑ کررہا ہے لیکن پوچھنے والا کوئی نہیں۔سینئر ترین ڈاکٹرز بے جا مداخلت ، جونیئر ڈاکٹرز کی سنیئر پوسٹس پر تعیناتی اور سہولیات کی عدم فراہمی پر استعفے دے چکے ہیں۔

ایمل ولی خان نے کہا کہ آڈٹ رپورٹ کے مطابق ایک کروڑ میں 47لاکھ کی کرپشن کی گئی، ایک ارب میں کتنی کرپشن ہوچکی ہوگی، عوام خود حساب لگالیں۔ادارے میں میرٹ کے خلاف بھرتیاں بھی جاری ہیں جبکہ گھوسٹ ڈاکٹرز کا انکشاف بہت پہلے ہوچکا ہے۔

انہوں نے ایک بار مطالبہ کیا کہ صوبہ بھر کے ہسپتالوں کا آڈٹ کرایا جائے اور تفصیلات عوام کے سامنے لائی جائے تاکہ تبدیلی سرکار کا کرپٹ چہرہ اور انکے کرپٹ لوگ عوام کو بھی معلوم ہو۔انہوں نے عدالتوں سے بھی درخواست کی کہ ان آڈٹ رپورٹس کے بعد ڈاکٹر برکی ، وزیراعظم اور وزیرصحت کو قانون کے کٹہرے میں لایا جائے اور جو بھی اس میگا کرپشن سکینڈل میں ملوث ہے انہیں سخت سے سخت سزا دی جائے۔