پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پاکستانی روپے کی مسلسل بے قدری سے حکومت کی نااہلی، جھوٹ اور دھوکہ دہی کا بھانڈہ عالمی چوراہے میں پھوٹ چکا ہے،عمران خان آئی ایم ایف کے ایجنٹ ہیں اور جب سے اقتدار میں آئے ہیں بدقسمتی سے قوم کو ہر روز ایک بُری خبر مل رہی ہے، صورتحال پر قابو نہ پایا گیا تو ملک وقوم کے لئے سنگین مشکلات پیدا ہونے کا خدشہ ہے،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ڈالر ملکی تاریخ میں پہلی بار 150روپے کی بلند ترین سطح پر آ گیا ہے جس کا سہرا نیازی حکومت کے سر ہے، موجودہ نالائق ٹیم نے پاکستان کی معیشت کو تباہی وبربادی سے دوچارکرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی اور پاکستانی روپیہ خطے کے تمام ممالک کی کرنسی سے نیچے آ گیا ہے، پاکستانی معیشت آخری ہچکیاں لے رہی ہے عوام تیاری کر لیں ملک جلد صومالیہ بننے کے قریب ہے، انہوں نے کہا کہ دنیا کے نا اہل ترین شخص کو22کروڑ عوام پر زبردستی مسلط کرنے والے بھی منہ چھپاتے پھر رہے ہیں،حکومت آئی ایم ایف کی ناجائز شرائط تسلیم کر کے پوری قومی معیشت کو طویل مدت کے لیے تباہی کی اندھیری غار کی طرف دھکیل رہی ہے، ایمل ولی نے کہا کہ حکومتی اقدامات کی بدولت ترقی کی شرح کم جبکہ سرمایہ کاری مارکیٹ سے غائب ہوچکی ہے، معیشت ٹوئٹ سے نہیں بلکہ عملی اقدامات سے چلتی ہے، انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ گذشتہ سال ہونے والے الیکشن کے ذریعے سلیکشن نے پاکستان پر سے دنیا کا اعتماد اٹھا دیا ہے، پی ٹی آئی کی حکومت نے پاکستانی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے۔ وزیروں کی تبدیلی سے عمران خان اس معاشی تباہی کی ذمہ داری سے بچ نہیں سکتے۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کی معیشت انا،ضد اور تکبرکی زد میں ہے۔عمران نیازی ضد،انا اورتکبرکو چھوڑکر معیشت کو ترجیح دیں، مزید وقت ضائع کیا گیا تو ملک کومعاشی اقتصادی لحاظ سے سنگین نتائج جھیلنا پڑیں گے، ایمل ولی خان نے کہا کہ جب سے تحریک انصاف برسراقتدار آئی ہے ملک مسلسل تبدیلیوں ہی کی زد میں ہے۔ مہنگائی کے سونامی سے اچھے خاصے خوشحال لوگ بھی اب خط غربت کے قریب پہنچ گئے ہیں اور جو غریب تھے وہ خط غربت سے بہت نیچے چلے گئے ہیں،عوام کو تبدیلی کے نام پر زندہ درگور کر دیا گیا،انہوں نے کہا کہ عالمی مالیاتی اداروں نے پاکستان کے معاشی حالات پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ پاکستان کی اقتصادی صورتحال اتنی ناگفتہ بہ ہے کہ اس سے خطہ بھی متاثر ہوگا اور یہ خطے کی معاشی ترقی پر بوجھ بن جائے گی۔انہوں نے کہا کہ ملک بچانے کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کو میدان میں آکر حکومت کی رخصتی کی تاریخ طے کرنا ہو گی۔