پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے ماہ صیام میں مہنگائی کے طوفان پر انتہائی تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ مہنگائی کا یہ جن حکومت کیلئے الٹی گنتی کا سبب بن جائے گا،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ملک کو مدینہ جیسی ریاست بنانے کیلئے آنے والا جعلی وزیراعظم گذشتہ نوماہ میں اس ریاست میں مہنگائی کے بے قا بو جن پر قابو نہیں پا سکا۔موجودہ ملکی صورتحال عجیب ہوچکی ہے وزیرخزانہ کے پاس ملک کومعاشی بحران سے نکالنے کا کوئی فارمولانہیں ہے اور اس کے نتیجے میں عوام کومہنگائی کی چکی میں پیس کررکھ دیا گیا ہے۔انہو ں نے مزید کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت نے ہر وعدے پر یوٹرن لیا ہے تحریک انصاف کی حکومت نے رمضان سے پہلے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کردیاجس سے ہر چیز کی قیمت بڑھ جاتی ہے ،ایف بی آر کے چیف کوتبدیل کرنے سے کچھ نہیں ہوگا، 480 ارب روپے کا شارٹ فال ہوچکا ہے،انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں حکومت نام کی کوئی چیز نہیں ، شہری انتظامیہ غائب ہے اور عوام منافع خوروں کے رحم و کرم پر ہیں، ایمل ولی خان نے کہا کہ رمضان سستے بازار صرف دکھاوا ہیں اور وزراء کو” ماموں“ بنانے کے بعد ان سستے بازاروں کا نام و نشان تک نہیں رہتا۔

انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف کی خوشنودی کیلئے عبدالحفیظ شیخ کو مشیر خزانہ بنایا گیا ہے اور اب پاکستانی عوام کی بجائے ملٹی نیشنل کمپنیوں کے مفاد کے تحت معاشی پالیسیاں تشکیل دی جائیں گی تبدیلی سرکار کی پالیسیوں نے عوام کو پریشان کر دیا ہے ،ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کرنے والے عمران خان کی حکومت نے اب تک 30 لاکھ لوگوں کو بے روزگاراور ہزاروں کو بے گھر کیاہے،عوام تیزی سے غربت کی لکیر سے نیچے گر رہے ہیں جبکہ بڑھتی ہوئی مہنگائی اوربے روزگاری غریب عوام کو مایوسی میں مبتلا کر رہی ہے۔ تبدیلی کے خواب مہنگائی کے عذاب میں بدل گئے ہیں۔ رمضان شروع ہوتے ہی مہنگائی کا سونامی آ گیا ہے۔ حکومت نے اپنی نااہلی کا سارا بوجھ عوام پر ڈال دیا ہے۔ حکومت رمضان میں مہنگائی روکنے کے لئے موثر اقدامات کرے اور ناجائز منافع خوروں کے خلاف کریک ڈاؤن کیا جائے۔