پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ خیبر لیکس کی تحقیقات مکمل ہونے کے بعد دھول چھٹ چکی ہے اور کرپٹ مافیا کو پہچاننے میں کوئی شک و شبہ باقی نہیں رہا،نیب کی جانب سے خیبر بنک سکینڈل کی تحقیقات مکمل ہونے پراپنے رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سابق ایم ڈی سمیت 103افراد کو غیر قانونی طور پر بھرتی کر کے صوبے کے سب سے زیادہ آمدن والے بنک کو بے دردی سے لوٹا گیا،اور اس وقت کی حکومت نے اپنی تجوریاں بھرنے کو ترجیح دی، ایمل ولی خان نے کہا کہ قواعد و ضوابط کی دھجیاں اڑانے والے عوام کی رہنمائی کرنے کے اہل نہیں ہو سکتے،انہوں نے کہا کہ سابق ایم ڈی بلال مصطفی کا کنٹریکٹ ختم ہونے کے بعد جس انداز میں پرویز خٹک اور ان کی ٹیم نے بنک کو نقصان پہنچایا اس کی تاریخ میں مثال نہیں ملتی ،اقربا پروری اور رشوت کے بل بوتے پر بھرتیاں اور بنک کا سرمایہ لوٹنے والوں کے خلاف کارروائی کر کے انہیں عبرت کا نشان بنایا جاناچاہئے تاکہ مستقبل میں کوئی بھی شخص اس قسم کی گھناؤنی حرکت سے باز رہے، انہوں نے کہا کہ خیبر بنک میں ہونے والے کرپشن کی نشاندہی کرنے والے 5ملازمین کو بھی حکومت نے برطرف کر دیا جبکہ وسل بلور قانون کے تحت خرد برد اور کرپشن کی نشاندہی کرنے والے کو پر فیصد ادا کیا جانا ضروری ہے، انہوں نے مطالبہ کیا کہ حکومتی گھپلوں کی نشاندہی کرنے والوں کو اگر سہولت نہیں دی جاتی تو انہیں ان کی ملازمتوں پر بحال کیا جائے، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی گزشتہ اور موجودہ حکومت کی غیر ضروری مداخلت نے خیبر بنک کو تباہ کر دیا،خیبر بنک میں غیر ضروری مداخلت ناقابل برداشت ہے، اے این پی اپنے اصولی مؤقف پر قائم ہے کہ ہم خیبر بنک کی نجکاری کی شدید مخالفت کرینگے ، ایمل ولی نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کے دور میں قومی وسائل سے اپنوں کو نوازنے کا سلسلہ چھ سال سے جاری ہے ،اور اس تمام عرصہ میں مختلف گھی کمپنیوں سمیت پلاسٹک انڈسٹری کو کروڑوں روپے کے قرضے معاف کرانے میں حکومت کے مخصوص چہرے ملوث ہیں،جو غیر قانونی طور پر بنک کو محکمہ خزانہ کی بجائے پی ڈبلیو ڈی کے تحت چلاتے رہے، انہوں نے نیب سے مطالبہ کیا کہ تحقیقاتی روپرٹ جلد منظر عام پر لائی جائے اور ملوث مگر مچھوں پر ہاتھ ڈال کر ان کی لوٹے گئے قومی وسائل واپس لئے جائیں، ایمل ولی خان نے اس بات پر بھی غم و غصہ کا اظہار کیا کہ احتساب کمیشن کو لگائے جانے والے تالے اور خیبر بنک میگا کرپشن سکینڈل ایک ہی سلسلے کی کڑیاں ہیں جسے صرف سیاسی مخالفین کے خلاف استعمال کئے جانے کیلئے قائم کیا گیاتھا، انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف نے صوبے اور ملک کو تاریکیوں میں دھکیل دیا ہے اور اگر عمران نیازی مزید اقتدار میں رہے تو ملک صومالیہ بن جائے گا۔