پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ200ارب ڈالر بیرونی دنیا کے منہ پر مارنے والوں نے پورا ملک آئی ایم ایف کی جھولی میں ڈال دیا، کٹھ پتلی وزیراعطم قوم کو جواب دیں ملک کس مول گروی رکھا گیا ہے،اپنے ایک بیان میں ایمل ولی خان نے کہا کہ عمران کی موجودگی میں ملک کی معیشت بہتر نہیں ہو سکتی کیونکہ وہ خود بہتر معاشی پالیسیوں کی راہ میں رکاوٹ ہیں ،مسلط وزیر اعظم اب ملک کیلئے سیکورٹی رسک بن چکے ہیں حکومت چند ماہ مزید اقتدار میں رہی تو ملک دیوالیہ ہو جائے گا،
انہوں نے کہا کہ ڈاکٹر رضا باقر ملکوں کو قرضے کی غلامی میں رکھنے کی مہارت رکھتے ہیں ،خود دار اور غیرت مند قوم کی عزت نیلام کی جا رہی ہے، ایمل ولی خان نے کہا کہ ملک کی آزادی اور خود مختاری گروی رکھ دی گئی ہے ، موجودہ حکومت کا ہر دن عوام کے لئے نئے عذاب کا باعث بن رہا ہے ،حکمرانوں نے پاکستان کو آئی ایم ایف کی کالونی بنا دیا ہے، صورتحال واضح ہو چکی ہے کہ اسد عمر اور طارق باجوہ آئی ایم ایف کی شرائط کی راہ میں رکاوٹ تھے۔
انہوں نے کہا کہ حکومت ملک کی بگڑتی معاشی صورتحال کو کنٹرول کرنے میں ناکام ہوگئی ہے ،مہنگائی میں دن بہ دن اضافہ ہورہا ہے لیکن حکمران غفلت میں قوم کو روحانیات کا درس دے رہے ہیں۔ ایمل ولی خان نے کہا کہ وزیر اعظم کو روحانیات سے نکل کر اپنے ہی کھودے گڑھے سے قوم کو بچانے کیلئے سوچنا چاہئے،انہوں نے کہا کہ بلند و بانگ دعوے کرنے والے جب میدان میں اترے تو سارے تیر خطا گئے۔ حقیقت سب کے سامنے ہے کہ کپتان کی ٹیم میں کوئی بھی ایسا شخص نہیں تھا جو کسی محکمے کو چلانے کی اہلیت رکھتا ہو،لہٰذا انہیں معاشی معاملات چلانے کے لیے امپورٹڈ شخص کو معاملات دینا پڑے۔یہی نہیں بلکہ درجن بھر سے زائد اہم عہدے انہوں نے غیر منتخب افراد کے سپرد کر دیے ،کئی اہم عہدوں پر جان بوجھ کے ایسے لوگ لگائے جا رہے ہیں جو پہلے آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک جیسے اداروں میں رہ چکے ہیں، انہوں نے کہا کہ ملک کو تباہی سے بچانے کیلئے واحد آپشن غیر جانبدارانہ و شفاف انتخابات ہیں۔