2019 ایکشن اِن ایڈ آرڈیننس کالعدم قرار دینا جمہوری قوتوں کی جیت ہے،ایمل ولی خان

ایکشن اِن ایڈ آرڈیننس کالعدم قرار دینا جمہوری قوتوں کی جیت ہے،ایمل ولی خان

ایکشن اِن ایڈ آرڈیننس کالعدم قرار دینا جمہوری قوتوں کی جیت ہے،ایمل ولی خان

پشاور( پ ر)عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی صدر ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ پشاور ہائیکورٹ کی جانب سے ایکشن اِن ایڈ سول پاور آرڈیننس کو کالعدم قرار دینا درحقیقت جمہوری قوتوں کی جیت ہے،غیرقانونی حراستی مراکز کو بھی پختونخوا پولیس کے سپرد کرنا تاریخی فیصلہ ہے۔انسانی حقوق کیلئے اے این پی اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ صوابی کے دس روزہ تنظیمی دورے کے چوتھے روز چھوٹا لاہور میں مختلف شمولیتی اجتماعات اور کارنر میٹنگز سے خطاب کرتے ہوئے ایمل ولی خان نے کہا کہ سلیکٹڈ حکومت کے بعد سلیکٹڈ گورنر نے ایک آرڈیننس کے ذریعے پورے صوبے کو فاٹا میں ضم کرنے کی کوشش کی تھی جسے پشاور ہائیکورٹ نے کل کالعدم قرار دے دیا۔تمام جمہوری قوتیں اور اے این پی پشاور ہائیکورٹ کے مشکور ہیں جنہوں نے حق اور سچ پر مبنی فیصلہ جاری کرتے ہوئے نا صرف ایکشن اِن ایڈ سول پاور آرڈیننس کو کالعدم قرار دیا بلکہ غیرقانونی حراستی مراکز کو بھی خیبرپختونخوا پولیس کے حوالے کرنے کے احکامات جاری کئے۔ انہوں نے کہا کہ اس فیصلے سے عدلیہ پر عوام کا کھویا ہوا اعتماد بحال ہوگا بلکہ ملک میں انصاف اور قانون کا بول بالا ہوگا۔ ایمل ولی خان نے امید ظاہر کی کہ خیبرپختونخوا پولیس بغیر کسی دبائو کی عدالتی احکامات کی پیروی کرتے ہوئے تین دن میں ان حراستی مراکز کا کنٹرول اپنے ہاتھ میں لے گی۔اے این پی کے صوبائی صدر نے مزید کہا کہ پاکستان میں سیاسی جماعتوں اور مصنوعی تحریک انصاف میں زمین و آسمان کا فرق ہے۔ اے این پی ایک لمحے کیلئے بھی عمران خان کو وزیراعظم تسلیم نہیں کرتی، وہ غلام وزیراعظم ہے۔ نوجوانوں کو ایک کروڑ نوکریاں دینے والے نے اب پاکستان میں 400محکمے بند کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ یہ ملکی تاریخ کی واحد حکومت ہے جس سے نا صرف عوام بلکہ اپنے کارکنان بھی مایوس ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اسلام آباد مارچ سے پہلے عمران خان باعزت طریقے سے گھر چلے جائیں کیونکہ تمام اپوزیشن جماعتیں اس بات پر متفق ہیں کہ ملک میں نئے شفاف اور غیرجانبدارانہ انتخابات کرائے جائیں، آئین پاکستان کو تحفظ فراہم کیا جائے، ہر ادارہ آئین کے دائرہ اختیار میں کام کریں اور انتخابات میں فوج مداخلت سے گریز کریں۔انہوں نے کہا کہ اگر ان مطالبات کو تسلیم نہیں کیا جاتا تو پھر کپتان اور انکے سلیکٹرز تیاریاں شروع کریں، 27اکتوبر کو جمہوری قوتیں جمہوریت کے تحفظ اور ووٹ کے تقدس کیلئے اسلام آباد میں ڈیرے ڈالیں گے

شیئر کریں