پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی صدر اسفندیار ولی خان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں حالیہ اضافہ مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت عوام کی حالت زار پر رحم کرتے ہوئے پیٹرول اور ڈیزل کی قیمتوں میں ہوشربااضافہ واپس لے ، ولی باغ چارسدہ میں مختلف پارٹی وفود سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات میں حالیہ اضافے سے ثابت ہو چکاہے کہ ملک چلانا ان حکمرانوں کے بس میں نہیں، عوام کو سہولت کی فراہمی حکومتوں کی اولیں ترجیح ہوتی ہے تاہم بدقسمتی سے پاکستان میں موجودہ حکمران نا آشنا ہیں اور غریب عوام پر عرصہ حیات تنگ کرنے کیلئے ہر حربہ استعمال کیا جا رہا ہے۔

اسفندیار ولی خان کا کہنا تھا کہ موجودہ وزیرخزانہ اپوزیشن میں رہتے ہوئے46روپے لیٹر پیٹرول کے دعوے کرتے نہیں تھکتے تھے لیکن آج خود اقتدار میں آ کر عوام پر پٹرول بم گرارہے ہیں، مسلسل دو ماہ سے قیمتوں میں اضافے سے عوام کی چیخیں نکل رہی ہیں لیکن وفاقی وزراء کے کانوں تک عوام کی چیخ و پکار نہیں پہنچ رہی،سابق حکومتوں پر پیٹرول کے ذریعے جیبیں گرم کرنے کے الزامات لگانے والے آج اس اضافے سے کس کی جیبیں گرم کررہے ہیں؟

انہوں نے کہا کہ اگست 2018 سے اپریل 2019 تک چار مرتبہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ اس بات کا ثبوت ہے کہ نااہل حکمران ملک چلانے کے اہل نہیں اور عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مسلسل کمی کے باوجودملک پر مسلط حکمران عوام کی جیبوں پر ڈاکے ڈالنے میں مصروف ہیں ، انہوں نے کہا کہ حکومت کے پاس کوئی پالیسی یا وژن نہیں تھا ،اور ناتجربہ کاروں کی غلط پالیسیوں کا خمیازہ عوام بھگت رہے ہیں۔

اسفندیار ولی خان نے عمران خان کے اٹھارویں ترمیم بارے حالیہ بیان پر بھی افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ اے این پی گزشتہ الیکشن کے بعد سے ان تحفظات کا اظہار کرتی رہی ہے کہ حکمران اٹھارویں ترمیم کو چھیڑنے کے مخصوص ایجنڈے کیلئے اقتدار میں لائے گئے ہیں،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کے بیان نے ہمارے خدشات اور تحفطات کو صحیح ثابت کر دیا ہے اور اٹھارویں ترمیم کا خاتمہ یا اس میں مزید کسی ترمیم کے ذریعے صوبوں کے حقوق غصب کئے جائیں گے جس کی اے این پی کسی طور اجازت نہیں دے گی،اسفندیار ولی خان نے کہا کہ صوبائی خودمختاری کا حصول اے این پی دور حکومت کا عظیم کارنامہ ہے جس کے تحت چھوٹے صوبوں کا احساس محرومی ختم کرنے میں مدد ملی ،انہوں نے کہا کہ دور آمریت میں ہمیشہ صوبوں کے حقوق چھینے گئے اور آج عمران خان بھی اسی ڈگر پر چل رہے ہیں،اسفندیار ولی خان نے کہا کہ وفاق اٹھارویں ترمیم سے نہیں بلکہ ناکام حکومتی پالیسیوں کی وجہ سے کمزور ہوا ہے،عوام کے ساتھ کئے گئے وعدے پورے نہیں کئے جا رہے اب وہ اپنی ناکامیوں کو چھپانے کیلئے اٹھارویں ترمیم کے خلاف سازشوں میں مصروف ہیں، اٹھارویں ترمیم ایک حقیقت ہے اور اسے چھیڑنے کی اجازت نہیں دیں گے ،انہوں نے کہا کہ بدترین معاشی صورتحال قومی سلامتی کے لیے بھی مسئلہ بن چکی ہے۔