پشاور (پ ر) عوامی نیشنل پارٹی کے سینئر رہنما حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ پختون مظام کی چکی میں پس رہے ہیں اور سلیکٹد وزیر اعظم نے بنیادی انسانی ضروریات بھی عوام کی دسترس سے دور کر دی ہیں، اے این پی نے ہمیشہ پختونوں کے حقوق اور آزادی کیلئے کوششیں کیں اور آج بھی اپنی قوم کے حق کی خاطر کسی سے بھی مذاکرات کیلئے تیار ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے عنایت کلے باجوڑ میں انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا،انہوں نے کہا کہ نالائق اعطم مزید دو سال مزید مانگ رہا ہے تاکہ پاکستان ہی ختم کر دے، یہ وہ نالائق شخص ہے جو بیس سال میں بھی کچھ نہیں کر سکتا،انہوں نے کہا کہ انگریزوں کے خلاف جدوجہد آزادی میں کوئی بھی جماعت نہیں تھی صرف باچا خان کا سرخ جھنڈا میدان میں رہا اور خدائی خدمتگاروں نے جانوں کے نذرانے پیش کر کے فرنگیوں سے آزادی حاصل کی،انہوں نے کہا کہ پختونوں کے آپس میں نفاق کی وجہ سے آج ملک دشمن لوگ اقتدار پر قابض ہیں جنہوں نے پورا ملک ہی آئی ایم ایف پر فروخت کر دیا ہے، حاجی غلام احمد بلور نے کہا کہ تبدیلی کے نعرے طویل عرسہ تک لگائے گئے لیکن جب سونامی آیا تو اپنے ساتھ ایسی تباہی لے کر آیا کہ غریب خودکشیوں پر مجبور ہو گئے، انہوں نے کہا کہ تمام بنیادی ضروریات انسانی پہنچ سے دور کر دی گئیں اور عوام کا جینا مشکل کر دیا گیا ہے، انہوں نے کہا کہ قبائلی عوام کئی دہائیوں سے امتیازی سلوک کی زد میں ہیں اور اکیسویں صدی میں بجلی،گیس، تعلیم اور صحت سے محروم ہیں، انہوں نے کہا کہ انگریز کے دور میں ہماری بجلی ہمارے ساتھ تھی لیکن ون یونٹ بنا کر ہماری بجلی اور گیس بھی چھین لی گئی انہوں نے کہا کہ ایک روپے فی یونٹ بجلی خرید کر ہمیں واپس 20روپے میں فروخت کی جا رہی ہے،انہوں نے کہا کہ در حقیقت حکمرانوں کی کوئی حیثیت نہیں وہ صرف ریت کی بوری ہیں،ہماری اصل جنگ بوری کے پیچھے موجود قوتوں کے ساتھ ہے،انہوں نے پختونوں کے اتحاد واتفاق کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہمارے آپس کے نفاق کی وجہ سے بعض قوتیں ہمارے حقوق پر غاصب ہیں اور ہمیں اپنے حقوق کی خاطر ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا پڑے گا،انہوں نے کہا کہ جب سے موجودہ نا اہل حکومت اقتدار میں لائی گئی ہے 18ویں ترمیم کے خاتمے کی کوششیں کی جا رہی ہیں، حاجی بلور نے کہا کہ جب تک اے این پی کا ایک کارکن بھی زندہ ہے 18ویں ترمیم ختم کرنے کی سازش کامیاب نہیں ہو سکتی۔