ملکی حالات پختونوں کو دوبارہ جنگ کا ایندھن بنانے کی جانب اشارہ کر رہے ہیں، ایمل ولی خان
پاکستان اور افغانستان پر جنگ مسلط کی گئی تو اے این پی اس کی مخالفت میں میدان میں ہوگی۔
حکمرانوں کی عاقبت نا اندیشی کے باعث تمام ہمسایہ ممالک ناراض ہیں جو بڑی تباہی کا پیش خیمہ ہو سکتے ہیں۔
ملک میں 70سال سے عوامی نمائندگی پر شب خون مارکر جمہوریت کو کمزور کرنے کی کوشش کی گئی۔
سعودی قرضہ ملنے پر خوشیاں اور جشن منانے والے سعودی ڈیل سے قوم کو آگاہ کریں۔
ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھنا چاہئے ،ایک مخصوص تنظیم سیاسی شہید بننے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہی ہے۔
اٹھارویں ترمیم کے خاتمے اور کالاباغ ڈیم کے ایشو سے گریز کیا جائے ، باچا خان مرکز میں خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ڈپٹی جنرل سیکرٹری ایمل ولی خان نے کہا ہے کہ ملکی حالات پختونوں کو دوبارہ جنگ کا ایندھن بنانے کی جانب اشارہ کر رہے ہیں ،سعودی ڈیل کی شرائط پر پارلیمنٹ کو آگاہ کیا جائے ،پاکستان اور افغانستان پر جنگ مسلط کی گئی تو اے این پی اس کی مخالفت میں میدان میں ہوگی ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے باچا خان مرکز میں نیشنل یوتھ آرگنائزیشن کی صوبائی مشاورتی کونسل کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ نیشنل یوتھ آرگنائزیشن اے این پی کی ذیلی تنظیم اور پارٹی کا ہراول دستہ ہے اور نوجوانوں پر لازم ہے کہ کہ وہ تنظیم اور پارٹی کی فعالیت کیلئے اپنا بھرپور کردار ادا کریں اور باچا خان کا پیغام نوجوان نسل تک پہنچانے میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھیں، حکمرانوں کی عاقبت نا اندیشی کے باعث تمام ہمسایہ ممالک ناراض ہیں جو مستقبل میں بڑی تباہی کا پیش خیمہ ہو سکتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ ملک میں ہمیشہ جمہوریت کو کمزور کرنے کی کوشش کی گئی اور عوامی مینڈیٹ چوری کرنے کا معاملہ آج نیا نہیں یہاں 70سال سے عوامی نمائندگی پر شب خون مارا گیا،انہوں نے کہا کہ باچا خان کے سپاہی کبھی جھک نہیں سکتے اور وقت ثابت کرے گا کہ ہمارا نظریہ ختم نہیں ہو سکتا، ایمل ولی خان نے کہا کہ ہر بار الیکشن میں ہمیں دیوار سے لگانے کی کوشش کی گئی اور25جولائی کے انتخابات میں بھی ہمارا مینڈیٹ چوری کر کے ایسی مخصوص جماعت کو عوام پر مسلط کر دیا گیاجس نے اپنے126دن کے دھرنے میں کارکنوں کو شہید کرانے کیلئے کوششیں کیں ، انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں ایک مخصوص تنظیم سیاسی شہید بننے کیلئے ایڑی چوٹی کا زور لگا رہی ہے تاہم اس کی حقیقت سب پر عیاں ہے، انہوں نے واضح کیا سعودی قرضہ ملنے پر خوشیاں اور جشن منانے والے سعودی ڈیل سے قوم کو آگاہ کریں ، انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک اور جنگ کا ایندھن بننے کا متحمل نہیں ہو سکتا ، انہوں نے ایبٹ آباد آپریشن کے حوالے سے بھی کہا کہ آج تک اس کے محرکات سے قوم کو آگاہ نہیں کیا گیا،انہوں نے کہا کہ افغانستان کے ساتھ دوستانہ تعلقات خطے میں پائیدار امن کیلئے ضروری ہیں،ایمل ولی خان نے کہا کہ ملک کو اجرتی قاتل بنانے کی بجائے ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھنا چاہئے ،انہوں نے کہا کہ کالاباغ ڈیم اور اتھارویں ترمیم کے ایشو دوبارہ اٹھائے جارہے ہیں ،اے این پی واضح کر چکی ہے کہ کالاباغ ڈیم ملک کی تین صوبائی اسمبلیاں مسترد کر چکی ہیں لہٰذا اس گڑھے مردے کو اکھاڑنے سے گریز کیا جائے ، انہوں نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کو چھیڑنے یا واپس لینے سے ملک کی یکجہتی کو نقصان پہنچے گا اور حکمران کسی بھی ایسی کوشش سے گریز کریں جس سے صوبوں اور مرکز کے درمیان نفرت پیدا ہو۔