سیلیکٹڈ وزیر اعظم کی غیر سنجیدہ پالیسیوں سے ملک عالمی سطح پر تنہا ہوگیا ہے، میاں افتخار حسین

پاکستان کو دیوالیہ شو کرنے والے حکمرانوں پر دنیا کا کوئی ملک اعتبار نہیں کر سکتا۔

قبائلی اضلاع کے عوام کیلئے ویزوں کے اجراء میں سہولیات فراہم کی جائیں۔

اٹھارویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو ان کے وسائل پر اختیار ملا ہے جو وفاقی حکومت کی آنکھ میں کھٹک رہی ہے ،

حکومت کسی بھی ایسے اقدام سے گریز کرے جس سے صوبوں اور مرکز کے درمیان نفرت پیدا ہو۔

ناکام پالیسیوں کے باعث کم عرصہ میں دو دوست ممالک ناراض ہو چکے ہیں۔لنڈی کوتل پریس کلب میں صحافیوں سے بات چیت

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ سیلیکٹڈ وزیر اعظم کی غیر سنجیدہ پالیسیوں سے ملک دنیا میں تنہا ہوگیا ہے ،پاکستان کو دیوالیہ شو کرنے والے پر دنیا کا کوئی ملک اعتبار نہیں کر سکتا ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے لنڈی کوتل پریس کلب میں صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ، مرکزی سیکرٹری مالیات ارباب محمد طاہر خان ،صوبائی نائب صدر عمران آفریدی اور خیبر ایجنسی کے صدر شاہ حسین شنواری بھی اس موقع پر ان کے ہمراہ تھے ، میاں افتخار حسین نے لنڈی کوتل میں جرگوں سے ملاقات کی اور مختلف پروگراموں میں شرکت کی ، میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے مطالبہ کیا کہ قبائلی اضلاع کے عوام کیلئے ویزوں کے اجراء میں سہولیات فراہم کی جائیں ، انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت نے اٹھارویں ترمیم کا خاتمہ کرنا چاہتی ہے جس کی اے این پی بھرپور مخالفت کرے گی، انہوں نے کہا کہ قبائلی اضلاع کو این ایف سی ایوارڈ میں ان کا جائز حق دیا جائے اور فاٹا انضمام کے بعد ترقیاتی پیکج صوبائی حکومت کے ذریعے تقسیم کیا جانا چاہئے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ اٹھارویں ترمیم کے ذریعے صوبوں کو ان کے وسائل پر اختیار ملا ہے جو وفاقی حکومت کی آنکھ میں کھٹک رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ حکومت کسی بھی ایسے اقدام سے گریز کرے جس سے صوبوں اور مرکز کے درمیان نفرت پیدا ہو ،انہوں نے کہا کہ احساس محرومی بڑھنے سے حالات بگڑ سکتے ہیں، انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب شرمندگی کا باعث بنا ،16ارب کے خسارے کا رونا روتے 3ارب پر خوشیاں بنانے لگے ہیں ، انہوں نے کہا کہ سعودی عرب نے تین ارب دیئے لیکن انہیں خرچ کرنے سے بھی منع کیا،انہوں نے کہا کہ حکومت کی غیر سنجیدگی اور ناکام پالیسیوں کے باعث کم عرصہ میں دو دوست ممالک ناراض ہو چکے ہیں جبکہ دنیا کا کوئی ملک اب پاکستان پر اعتبار نہیں کر رہا ،انہوں نے کہا کہ ملک کو عالمی سطح پر تنہا کرنے کا سہرا بھی موجودہ حکومت کے سر ہے۔