صوبائی حکومت خواتین کیلئے قانون سازی کرنے میں ناکام رہی ہے، شگفتہ ملک
چائلڈ لیبر اور پروٹیکشن بارے قوانین پر عملدرآمد نہ ہونا مایوس کن ہے۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی صوبائی جائنٹ سیکرٹری شگفتہ ملک نے خواتین کی فلاح وبہبود کیلئے تحریک انصاف کی خاموشی اور غفلت کو مایوس کن قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ گزشتہ پانچ سال کے دوران خواتین کیلئے کوئی قانون سازی نہیں کی گئی ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ اے این پی واحد سیاسی جماعت ہے جس میں خواتین کو برابری کی بنیاد پر حقوق دیئے گئے ہیں اور جماعت میں خواتین کا کوئی الگ ونگ نہیں ہے، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے صوبائی کابینہ میں کسی خاتون رکن اسمبلی کو شامل نہیں کیا جو اس بات کا ثبوت ہے کہ پی ٹی آئی صنفی امتیاز پر یقین رکھتی ہے، شگفتہ ملک نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں یتیم بچوں کے معاملے پر صوبائی حکومت نے مجرمانہ خاموشی اختیار کر رکھی ہے جبکہ چائلڈ لیبر کے قوانین پر عمل درآمد نہیں کیا جا رہا ، انہوں نے کہا کہ اس حوالے سے ابھی بہت کام باقی ہے اور بچوں کے حوالے سے بہت سے قوانین بننے باقی ہیں، انہوں نے دارالامان کے حوالے سے چلنے والی خبروں پر افسوس کا اظہار کیا اور کہا کہ یہ تمام خبریں انتہائی مایوس کن ہیں صوبائی حکومت کو چاہئے کہ دارالامان میں موجود بچوں اور بچیوں کو تحفظ فراہم کرنے کیلئے ٹھوس اقدامات اٹھائے۔