گیس بندش سے خیبر پختونخوا کے عوام میں غلامی کا احساس پیدا کیا جا رہاہے، ثمر ہارون بلور

بجلی اور گیس ہمارے صوبے کی پیداوار ہیں لیکن بدقسمتی سے اس کی باگ ڈور پنجاب کے ہاتھ میں ہے۔

صوبے پر گیس کی بندش اٹھارویں ترمیم کی نفی ہے،عوام کو پتھر وں کے زمانے میں لے جا رہا ہے۔

سخت سردی میں گیس بندش کی وجہ سے بچوں میں بیماریاں پھیلنے کا خدشہ ہے۔

وفاقی و صوبائی حکمران عوام کے مسائل کا ادراک کرنے کی بجائے نوکریاں بچانے میں ہیں۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن اسمبلی ثمر ہارون بلور نے کہا ہے کہ صوبے بالخصوص پی کے78میں سردی کی آمد کے ساتھ ہی گیس بندش اور کم پریشر کا مسئلہ سر اٹھانے لگا ہے اور وفاقی و صوبائی حکومتیں عوامی مسائل سے غافل صرف اپنی کرسیاں بچانے کے چکر میں ہیں، بجلی اور گیس ہمارے صوبے کی پیداوار ہے لیکن بدقسمتی سے اس کی باگ ڈور پنجاب کے ہاتھ میں ہے جس نے ہمارے صوبے کی پیداوار خیبر پختونخوا کے عوام پر بند کر دی ہے ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پنجاب بڑا بھائی ہے تاہم وہ ہمارے ساتھ بھائیوں کی بجائے غلاموں جیسا سلوک کر رہا ہے جو انتہائی قابل مذمت ہے ، انہوں نے کہا کہ سردیوں میں گیس بندش نے ہمارے صوبے کے عوام کو ذہنی کرب میں مبتلا کر دیا ہے،انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا کے عوام پر گیس بند کر کے غلامی کا احساس پیدا کیا جا رہا ہے، ثمر بلور نے کہا کہ خیبر پختونخوا اس حوالے سے انتہائی بدنصیب ہے کیونکہ اٹھارویں ترمیم میں پیداواری رائلٹی کے حوالے سے واضح کہا گیا ہے ۔ گیس جو ہمارے صوبے میں ضرورت سے زیادہ پائی جاتی ہے لیکن ہمارے صوبے میں لوگوں کو گیس نہیں مل رہی ،جبکہ بچوں کو بغیر ناشتے کے سکولوں کو بھجوایا جاتا ہے ،انہوں نے افسوس کا اظہار کیا کہ حکمران قوم کو پتھر کے زمانے میں لے جا رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ سردی میں گیس بندش کی وجہ سے بچوں میں بیماریاں پھیلنے کا خدشہ ہے اور اگر کسی بھی قسم کا نقصان ہوا تو ذمہ داری حکومت پر ہوگی۔