حکومت کا سو روزہ پلان پانی کا بلبلہ ثابت ہوا، ثمر بلور
ایک کروڑ نوکریاں اور پچاس لاکھ گھروں کی تعمیر صرف نمائشی اعلانات تھے۔
خیبر تا کراچی ہزاروں خاندان تجاوزات کے نام پر بے روزگار کر دیئے گئے۔
حکمران سو دن میں سوائے بھینسیں بیچنے کے کوئی خاطر خواہ کارکردگی نہ دکھا سکے۔
ارکان اسمبلی ہفتہ میں دو دن سوالوں کے جواب دینے والے وزیر اعظم کے منتظر ہیں۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے حکومت کے سو دن کی کارکردگی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے اسے نمائشی اور دکھاوے کے اقدامات قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ الیکشن سے پہلے ایک کروڑ نوکریوں اور پچاس لاکھ گھروں کا وعدہ پانی کا بلبلہ ثابت ہوا ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ایک کروڑ نوکریاں دینے کے وعدے کرنے والوں نے خیبر تا کراچی ہزاروں خاندان بے روزگار کر دیئے ہیں اور تجاوزات کے نام پر بنا کسی نوٹس کے لوگوں سے روزگار چھین لیا گیا ، انہوں نے کہا کہ تین سو کنال پر غیر قانونی تعمیربنی گالہ کو ریگولرازڈ کرنے کیلئے چیف جسٹس کافی دن تک بے چین رہے اور غیر قانونی گھر کو قانونی دھارے میں لانے کیلئے حکم بھی جاری کرتے رہے ،انہوں نے کہا کہ اب یہ بات ثابت ہو چکی ہے کہ یہاں ایک نہیں دو پاکستان ہیں،ثمر بلور نے کہا کہ حکومت سو روز میں سوائے بھینسیں بیچنے کے کوئی خاطر خواہ کارکردگی نہ دکھا سکی جس سے زبر دستی مسلط کئے جانے والے حکمرانوں کی اصلیت واضح ہو چکی ہے ، ثمر بلور نے کہا کہ عمران خان کو اقتدار میں لانا مخصوص ایجنڈے کا حصہ تھا ،انہوں نے کہا کہ مسلط وزیر اعظم نے ہفتہ میں دو دن پارلیمنٹ میں آ کر سوالوں کے جواب دینے کا وعدہ کیا جو ہوا ہو گیا اور ارکان اسمبلی اب بھی اپنے سوالوں کے جواب کے منتظر ہیں ، ثمر بلور نے جنوبی پنجاب پر ایک دستخط کے حوالے سے بھی حیرت کا اظہار کیا کہ الیکشن سے قبل جنوبی پنجاب کا ایشو اب سردخانے کی نذر ہو چکا ہے جو اس بات کا ثبوت ہے کہ نمائشی اعلانات اور دکھاوے کے اقدامات کا اعلان قوم کو ورغلانے کیلئے تھے۔انہوں نے کہا کہ حکومت یوٹرن سے نہیں چلائی جا سکتی اور عمران خان نے یوٹرن کو قومی لیڈر شپ کا سیمبل قرار دے کر راہ فرار اختیار کرنے کی کوشش ہے البتہ حکومت کو اپنے سو روزہ پلان کے حوالے سے جواب دینا پڑے گا۔