این ایف سی میں امپورٹد ممبر کی نامزدگی ، اے این پی نے توجہ دلاؤ نوٹس جمع کرا دیا۔

پنجاب سے ممبر کی نامزدگی خیبر پختونخوا کے قابل بیوروکریٹس کے ساتھ نا انصافی اور مذاق ہے۔

خیبر پختونخوا میں قابل ماہر معاشیات کی کوئی کمی نہیں،پنجاب کا باشندہ ہمارے صوبے کی وکالت کیسے کر سکتا ہے۔

خیبر پختونخوا کی جامعات کیلئے وائس چانسلرز کا انتخاب بھی پنجاب سے کیا گیا۔

صوبائی حکومت کا یہ اقدام پختونوں کی حق تلفی کے مترادف ہے۔بحث کی اجازت دی جائے۔شگفتہ ملک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے این ایف سی میں پنجاب سے امپورٹڈ بیوروکریٹ کی بطور ممبر نامزدگی کے خلاف صوبائی اسمبلی میں توجہ دلاؤ نوٹس جمع کرایا ہے توجہ دلاؤ نوٹس ممبر صوبائی اسمبلی شگفتہ ملک نے جمع کرایا جس میں سپیکر کی توجہ اس جانب دلائی گئی ہے کہ قومی مالیاتی کمیشن میں پنجاب سے سابق بیوروکریٹ کی خدمات حاصل کی جا رہی ہیں جو ہمارے صوبے کے قابل،جفاکش اور اہم خدمات سر انجام دینے والے سابق اور موجودہ بیوروکریٹس کے ساتھ نا انصافی اور مذاق ہے جبکہ صوبائی حکومت کا یہ اقدام پختونوں کی حق تلفی کے مترادف ہے ،انہوں نے کہا کہ یہ مفاد عامہ کا انتہائی اہم مسئلہ ہے لہٰذا اس پر بحث کی اجازت دی جائے۔انہوں نے کہا کہ خیبر پختونخوا میں قابل ماہر معاشیات کی کوئی کمی نہیں،پنجاب کا باشندہ مالیاتی کمیشن میں ہمارے صوبے کی وکالت کیسے کر سکتا ہے، انہوں نے کہا کہ تبدیلی سرکار ہم پر پنجاب سے فیصلے مسلط کر رہی ہے اور ایک عرصہ سے پختونوں کی حق تلفی کا سلسلہ جاری ہے جس سے احساس محرومی نے جنم لیا ، انہوں نے کہا کہ اس سے قبل خیبر پختونخوا کی جامعات کیلئے وائس چانسلرز کا انتخاب بھی پنجاب سے کیا گیا جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ حکمران پنجاب کے اپنے چہیتوں کو نوازنے کیلئے خیبر پختونخوا کے وسائل استعمال کر رہے ہیں۔