نیشنل ایکشن پلان پر حکومتی مصلحت کا خمیازہ سیکورٹی اہلکاروں اور عوام کو بھگتنا پڑا ، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے رائیونڈ میں پولیس چیک پوسٹ پر خود کش حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے اسے ملک کے خلاف سازش قرار دیا ہے، اپنے مذمتی بیان میں انہوں نے کہا کہ اے این پی گزشتہ تین سال سے بار ہا 20نکاتی متفقہ دستاویز نیشنل ایکشن پلان پر من و عن عمل درآمد کا مطالبہ کرتی رہی لیکن حکومت اسے سنجیدہ لینے کیلئے کسی صورت تیار نہیں ، اور اس کا خمیازہ سیکورٹی اہلکاروں اور غریب عوام کو بھگتنا پڑا ،میاں افتخار حسین نے کہا کہ سیکورٹی اہلکاروں پر حملوں میں اضافے سے ان اہلکاروں کا مورال گر رہا ہے لہٰذا اب وقت آگیا ہے کہ بغیر کسی رو رعایت اور اچھے برے دہشتگروں کی تشریح سے باہر نکل کر قومی مفاد کو ترجیح دی جائے اور پنجاب بھر میں فوجی اپریشن فی الفور شروع کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کی تمام نرسریاں پنجاب میں ہیں لیکن حکومت کی جانب سے بیانات کے سوا کوئی ٹھوس حکمت عملی نظر نہیں آ رہی جس کی وجہ سے دہشت گرد منظم ہو رہے ہیں اور وہ باآسانی جب جہاں چاہیں ٹارگٹ کر سکتے ہیں، انہوں نے غمزدہ خاندانوں کے ساتھ دلی ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اے این پی متاثرین کے غم میں برابر کی شریک ہے ، انہوں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ دھماکے کے زخمیوں کو بہترین طبی سہولیات فراہم کی جائیں ،انہوں نے شہید ہونے والوں کی مغفرت اور زخمیوں کی جلد صحت یابی کیلئے بھی دعا کی۔