عوامی نیشنل پارٹی سمیت ضلع نوشہرہ کی تمام سیاسی جماعتوں نے نئی حلقہ بندیاں مسترد کر دیں۔

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی ضلع نوشہرہ سمیت ضلع کی سطح پر تمام سیاسی جماعتوں نے نئی حلقہ بندیوں کو مسترد کرتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ وزیر اعلیٰ کی مداخلت سے حلقہ بندیوں کے ذریعے نوشہرہ کا حلیہ بگاڑنے اور ظلم اور نا انصافی کے خلاف میدان میں نکلیں گے، ان خیالات کا اظہار اے این پی کے مرکزی جنرل سیکرٹری اورسابق حلقہ پی کے12اور موجودہ پی کے65سے اے این پی کے نامزد امیدوار میاں افتخار حسین اورضلع نوشہرہ کی سطح پر تمام سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں نے مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ،قبل ازیں نئی حلقہ بندیوں سے پیدا شدہ مشکل صورتحال کے حوالے سے تمام سیاسی جماعتوں بشمول پی ٹی آئی کے فارورڈ بلاک نے اجلاس میں شرکت کی اور نئی حلقہ بندیوں کے بعد نوشہرہ کیلئے پیدا ہونے والی مشکلات پر تفصیلی غور کیا گیا ، میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے میاں افتخار حسین نے حیرت کا اظہار کیا کہ اگر آبادی کی بنیاد پر حلقہ بندیاں کی گئی ہیں تو پھر اضافی سیٹیں بھی ملنی چاہئیں تھیں، لیکن ایسا نہیں ہوا اور پرویز خٹک کی خواہش کے مطابق حلقہ بندی کی گئی ہے ،انہوں نے کہا کہ الیکشن کمیشن بھی اس حوالے سے وضاحت کرے کہ سیاسی جماعتوں کو اعتماد میں لئے بغیر حلقہ بدیوں کو کیوں چھیڑا گیا ، انہوں نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ شمالاً اور جنوباً یا نمبرنگ سے ہمیں کوئی سروکار نہیں تاہم یہ سارا کھیل ایک ڈی سی کی رپورٹ پر کھیلا گیا جو خود وزیر اعلیٰ کی کٹھ پتلی ہے،انہوں نے کہا کہ ووٹ اور الیکشن عوام کیلئے ہوتے ہیں اور عوام کی رائے کو ہی نظر انداز کر دیا گیا لہٰذا ہم ان حلقہ بندیوں کو مسترد کرتے ہیں اور انصاف کی دھجیاں بکھیرنے پر وزیر اعلیٰ کے اقدام کی مذمت کرتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ این اے6اور این اے5پرویز خٹک کی جھولی میں ڈال دیئے گئے ہیں ، انہوں نے کہا کہ نوشہرہ کی بدقسمتی ہے کہ وزیر اعلیٰ کا تعلق اس ضلع سے ہے ،اور وزارت اعلیٰ کا عہدہ سنبھالنے کے بعد سے مسلسل نو شہرہ کے ساتھ زیادتی کی جا رہی ہے،ایک اور سوال کے جواب میں میاں افتخار حسین نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو نوٹس لے کر تمام پرانی حلقہ بندیاں بحال کرے،تمام سیاسی جماعتیں اس حوالے سے رابطوں میں ہیں اور اپنی لیگل ٹیمیں بھی تشکیل دے رہی ہیں جو اس حوالے سے کیس آگے بڑھائیں گی، انہوں نے کہا کہ احتجاج کیلئے بھی کمیٹی بنائی جائے گی،انہوں نے کہا کہ کسی فرد واحد کو خوش کرنے کیلئے کی گئی حلقہ بندیاں کسی صورت قبول نہیں ، الیکشن التوا کے حوالے سے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ الیکشن ہر صورت اپنے مقررہ وقت پر ہونے چاہئیں اور نئی حلقہ بندیوں کے ذریعے گڑ بڑ کرنے والے ہی در اصل انتخابات کا التوا چاہتے ہیں ،انہوں نے کہا کہ پرویز خٹک نے ہمیشہ سیاست کی بجائے سازش کی ہے اور ماضی میں تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ غداری کرنے کا ریکارڈ موجود ہے ، انہوں نے کہا کہ اس بار سیاسی یتیم مستقبل میں کسی اور جماعت میں جانے کیلئے پر تول رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ نوشہرہ کے عوام کے خلاف ہونے والی کوئی سازش کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔