سینیٹ انتخابات کے دوران ضمیر فروشی میں بنیادی رول پی ٹی آئی نے پلے کیا، ہارون بشیر بلور 

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی ترجمان ہاروبشیر بلور نے پی ٹی آئی کے رکن اسمبلی عبیداللہ مایار کی جانب سے سینیٹ میں ضمیر فروشی کی تصدیق کئے جانے کے بعد عمران خان سے ووٹ بیچنے والوں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ کیا ہے اور کہا ہے کہ مستقبل میں سیاسی ماحول کو پراگندہ کرنے والوں کا راستہ روکا جائے، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ پہلے کپتان اس وجہ سے کاروائی سے مکر گئے کہ ووٹ بیچنے والوں کے خلاف کوئی ٹھوس ثبوت نہیں ملے تاہم اب تمام صورتحال کلیئر ہو چکی ہے اور ضمیروں کا سودا کرنے والوں کے نام تک سامنے آ چکے ہیں، انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ پی ٹی آئی کی پوری قیادت اس میں ملوث ہے اور تعاون کے نام پر ایک کروڑ روپے تک دے کر ایم پی ایز کو خریدنے میں ملوث ہے ، انہوں نے کہا کہ ایسی ورتحال میں چیئرمین پی ٹی آئی کو فوری اقدام اٹھانا چاہئے اور ضمیر فروشوں کے خلاف فوری کاروائی کرنی چاہئے ، ہارون بلور نے الیکشن کمیشن سے بھی مطالبہ کیا کہ عبیداللہ مایار کے بیان کا نوٹس لے کر اس حوالے سے اپنی آئینہ ذمہ داریاں پوری کرے اور ووٹ بیچ کر ایوان بالا میں پہنچنے والوں کے خلاف حتی الوسع کاروائی کا آغاز کرے، دریں اثناے صوبائی ترجمان ہارون بلور نے پشاور کے علاقے گڑھی چندن میں ٹمبر مافیا کے ہاتھوں 6لاکھ سے زائد درختوں کی کٹائی پر بھی تشویش کا اظہار کیا ہے اور کہا ہے کہ اراضی مالکان کی جانب سے بار بار نشاندہی کے باوجود اس مافیا کے خلاف کاروائی کا نہ ہونا اس بات کا ثبوت ہے کہ ٹمبر مافیا کے پیچھے سیاسی اثرو رسوخ کار فرما ہے، انہوں نے کہا کہ بلیں سونامی ٹری کی حقیقت اب کھل کر سامنے آ گئی ہے اور عوام حکومت کے فریبی نعروں سے بخوبی آگاہ ہو چکے ہیں ، انہوں نے کہا کہ کرپشن پی ٹی آئی حکومت کا وطیرہ رہا ہے اور جب سے حکومت اقتدار میں آئی ہے کرپشن سکینڈل آئے روز منظر عام پر آ رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ کپتان کرپشن فری پاکستان چاہتے ہیں لیکن شاید وہ خیبر پختونخوا کو پاکستان کا حصہ نہیں سمجھتے ۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ 6لاکھ کاٹے گئے درختوں کی تحقیقات کر کے ملوث عناصر کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔