آئندہ انتخابات الیکشن کمیشن کیلئے امتحان ہیں، ماضی کی غلطیوں سے سبق سیکھنا ہوگا، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن 2018کے عام انتخابات کو شفاف اور غیر جانبدار انہ بنانے کیلئے اپنے آئینی اختیارات کا استعمال یقینی بنائے ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ نئے الیکشن ایکٹ کے مطابق خواتین کے ووٹ کو لازمی قرار دینے کے بعد الیکشن کمیشن مشترکہ پولنگ سٹیشنز کی بجائے خواتین کیلئے الگ پولنگ سٹیشنز کا قیام بھی یقینی بنائے تاکہ زیادہ سے زیادہ ووٹ پول ہو سکیں ، انہوں نے کہا کہ مشترکہ پولنگ سٹیشنز کی وجہ سے خواتین کے رائے دہی کا استعمال کی شرح میں کمی کا سامنا رہتا ہے، لہٰذا خواتین کو زیادہ سے زیادہ ووٹ پول کرنے کے مواقع ملنے چاہئیں جو ہماری آبادی کے نصف سے زیادہ ہے،سردار حسین بابک نے کہا کہ الیکشن عملے کی تربیت اور الیکشن ضابطہ اخلاق پر عمل درآمد یقینی بنانے سے ہی شفاف انتخابات کا انعقاد ممکن ہو گا، انہوں نے کہا کہ ووٹر کی سہولت کیلئے تمام ڈسٹرکٹ الیکشن افسران کو پرائمری سکولوں کی بجائے ہائی اور ہائیر سیکنڈری سکولوں میں پولنگ سٹیشنز بنانے چاہئیں، انہوں نے صوبائی الیکشن کمیشن کو سینیٹ انتخابات بہترین انداز میں کرانے پر مبارکباد پیش کی اور توقع ظاہر کی کہ وہ آئندہ عام انتخابات میں بھی اپنے اختیارات استعمال کرتے ہوئے شفاف انتخابات کو یقینی بنائیں گے،انہوں نے نے کہا کہ الیکشن کمیشن کو ابھی سے ووٹرز ، پولنگ ایجنٹ ، آگاہی مہم شروع کرنی چاہئے تاکہ شفاف الیکشن کے انعقاد میں ووٹرز ، پولنگ ایجنٹ ، امیدوار اور سیاسی جماعتوں کو اپنی ذمہ داری اور اختیار کے بارے میں علم ہو سکے، انہوں نے کہا کہ ماضی کے کمزور انتخابی عمل نے ووٹرز اور سیاسی جماعتوں کو مایوس کیا ہے لہٰذا الیکشن کمیشن کیلئے ایک بہت بڑا امتحان ہو گا ، انہوں نے امید کا اظہار کیا کہ ماضی میں ہونے والی غلطیاں اس بار نہیں دہرائی جائیں گی۔