پنجاب پر زبر دستی فیصلے مسلط کرنے سے نفرت پیدا ہو گی،میاں افتخار حسین
فیصلے کہیں اور ہو رہے ہیں، غلط فیصلے کرنے والے سانحہ مشرقی پاکستان کو بھی ذہن میں رکھیں۔
2013میں الیکشن کی بجائے حکومت کسی کے حوالے کی گئی، تحفظات کے باوجود ہم نے نتائج تسلیم کئے۔
شفاف اور غیر جانبدار الیکشن ہوں تو پی ٹی آئی کا ملک سے نام و نشان تک مٹ جائیگا۔
اے این پی دہشت گردی کے خلاف ہمیشہ سینہ سپر رہی اورکبھی غیر جمہوری قوتوں کے سامنے نہیں جھکی۔
پختونوں کا مستقبل تباہ کرنے میں کپتان کا ہاتھ ہے، پی کے65میں انتخابی جلسوں سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ ملک کے فیصلے کہیں اور سے ہو رہے ہیں اور غلط فیصلے کرنے والے سانحہ مشرقی پاکستان کو بھی ذہن میں رکھیں ، پنجاب پر کوئی بھی فیصلہ زبر دستی مسلط کرنے سے نفرت پیدا ہو گی، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے65میں انتخابی مہم کے دوران مختلف مقامات پر شمولیتی تقاریب اور جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، انہوں نے کہا کہ اے این پی دہشت گردی کے خلاف ہمیشہ سینہ سپر رہی اورکبھی غیر جمہوری قوتوں کے سامنے نہیں جھکی ، انہوں نے کہا کہ 2013میں الیکشن نہیں ہوا بلکہ حکومت کسی کے حوالے کی گئی تاہم تحفظات کے باوجود ہم نے نتائج تسلیم کئے ،میاں افتخار حسین نے کہا کہ آج پھر سے سب پر دروازے بند کر کے ایک مخصوص شخص کیلئے تمام دروازے کھول دیئے گئے ہیں،انہوں نے کہا کہ شفاف الیکشن ہوں تو پی ٹی آئی کا ملک سے نام و نشان تک مٹ جائے ،انہوں نے کہا کہ اداروں کا احترام ختم نہیں ہونا چاہئے،انہوں نے کہا کہ اے این پی نے انگریز دور سے آج تک ہمیشہ قربانی دی ہے ،ہمارے آباؤ اجداد نے ہماری آزادی کیلئے جانیں قربان کیں اور آج پختونوں کو ان کی قربانیوں کے نتیجے میں ایک پلیٹ فارم پر متحد ہونا چاہئے ،انہوں نے کہا کہ وزارت عظمی کا خواب دیکھنے والے ایک شخص نے سیاسی ماحول کو خراب کر دیا ہے ،پختونوں کا مستقبل تباہ کرنے میں کپتان کا ہاتھ ہے،انہوں نے کہا کہ پرویز خٹک پانچ سال وزیر اعلیٰ رہے اور سیاسی کارکنوں کو گالیاں دے رہے ہیں ،اے پی ایس کے شہداء کا تین دن تک نہ پوچھنے والا بھی خود کو وزیر اعلیٰ کہنے پر فخر محسوس کرتا رہا جبکہ یہ اس کیلئے ڈوب مرنے کا مقام تھا،انہوں نے کہا کہ سابق حکومت نے صوبے کو تباہی کے دہانے پر کھڑا کر دیا ،اے این پی اقتدار میں آ کر خزانے کو پاؤں پر کھڑا کرے گی جسے سابق وزیر اعلیٰ نے لوٹ لیا ہے ، انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ انتخابی مہم میں کوئی کسر اٹھا نہ رکھین اور خواتین کی انتخابی عمل میں شرکت یقینی بنانے کیلئے ہر ممکن کوششیں کی جائیں۔