دہشت گردی کی حالیہ لہر حکومتوں کی ناکامی کا ثبوت ہے، سردار حسین بابک

ہارون بلور پر حملہ انتخابی عمل پر نہیں بلکہ اے این پی کو الیکشن عمل سے باہر کرنے کی سازش ہے۔

دشمن کچھ بھی کر لے ہم ڈٹے رہیں گے اور میدان خالی نہیں چھوڑیں گے۔

مخصوص شخص کو وزیر اعظم بنانے کیلئے باقی تمام جماعتوں کو راستے سے ہٹانے کی کوشش کی جا رہی ہے۔

سیکورٹی ادارے اور حکومت انتخابی امیدواروں کی سیکورٹی یقینی بنانے کیلئے اقدامات کرے ۔

صوبے کو لوٹنے والوں کے خلاف نیب کی تحقیقات جاری ہیں،پی کے22میں انتخابی جلسوں سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے پشاور ، بنوں اورمستونگ میں ہونے والی دہشت گردی کی کاروائیوں کو موجودہ نگران حکومتوں کی ناکامی تصور کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہارون بشیر بلور کی قربانی رائیگاں نہیں جائے گی اور اے این پی الیکشن میں بھرپور طریقے سے حصہ لے گی ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پی کے22بونیر میں اپنی انتخابی مہم کے دوران مختلف مقامات پر شمولیتی تقاریب اور انتخابی جلسوں سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر بیشتر افراد نے مختلف جماعتوں سے مستعفی ہو کر اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا جبکہ کئی اہم شخصیات نے الیکشن میں اپنے بھرپور تعاون کا یقین بھی دلایا ، سردار حسین بابک نے کہا کہ اے این پی ایک مضبوط اور منظم جماعت ہے اور اس کی مقبولیت میں اضافے سے مخالف قوتیں بزدلانہ اقدامات پر اتر آئی ہیں،انہوں نے کہا کہ ہارون بشیر بلور پر حملہ انتخابی عمل پر نہیں بلکہ اے این پی کو الیکشن عمل سے باہر کرنے کی سازش ہے تاہم دشمن کچھ بھی کر لے ہم ڈٹے رہیں گے اور میدان خالی نہیں چھوڑیں گے ، انہوں نے کہا کہ2013میں بھی دہشت گردوں نے ہمیں دیوار سے لگانے کیلئے ٹارگٹ کیا لیکن اب صورتحال مختلف ہے اور دکھائی دے رہا ہے کہ ایک مخصوص شخص کو وزیر اعظم بنانے کیلئے باقی تمام جماعتوں کو راستے سے ہٹانے کی کوشش کی جا رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی کسی صورت دشمنوں کی سازش کے سامنے نہیں جھکے گی،سردار حسین بابک نے کہا کہ صوبے کو لوٹنے والوں کے خلاف نیب کی تحقیقات جاری ہیں اور تبدیلی والوں کا اصل چہرہ بہت جلد قوم کے سامنے ہو گا، حکومت میں آ کر ترقی کے رکے ہوئے عمل کا دوبارہ آغاز کریں گے ، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کی سابق حکومت نے خزانے کو بری طرح لوٹا اور منصوبوں کے نام پر اربوں کا قرض ہڑپ کر لیا گیا ، انہوں نے کہا سابق حکومت نے صوبے کو مالی و انتظامی طور پر تباہی کے دہانے پر لاکھڑا کیا ہے ، ،انہوں نے کہا کہ عوام کی اکثریت روزانہ کی بنیاد پر اے این پی میں شامل ہو رہی ہے اور اے این پی اپنے اوپر کئے جانے والے اعتماد کو کبھی ٹھیس نہیں پہنچائے گی،