صوبائی اور مرکزی حکومت دہشتگردوں کے ساتھ ملے ہوئے ہیں، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ اے این پی واحد جماعت ہے جو پختونوں کی بقا اور ان کے حقوق کے لیے لڑ رہی ہیں، عوام پی ٹی آئی کی ناکام حکومت اور ان کی جھوٹے وعدوں سے تنگ آچکے ہیں، انہیں احساس ہوا ہے کہ پی ٹی آئی کو ووٹ دے کر انہوں نے کتنی بڑی غلطی ہے، اگر جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوا تو اے این پی اس کے خلاف بھرپور مزاحمت کرے گی،صوبائی حکومت اور مرکزی حکومت دہشتگردوں کے ساتھ ملے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے عارضی امن ہے،ان خیالات کا اظہار انہوں نے یونین کونسل اکبرپورہ میں مختلف شمولیتی پروگراموں سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ شمولیتی پروگراموں میں پیپلز پارٹی سے حاجی ملک نادر خان، پی ٹی آئی سے بخاری خاندان اور حاجی یعقوب خان اور حاجی اسحاق خان نے اے این پی شمولیت اختیار کی۔میاں افتخار حسین نے شمولیت اختیار کرنے والوں اور پارٹی میں لوگوں کو شامل کرنے والوں کو مبارکباد دی اور کہا کہ ان کوششوں میں اکبرپورہ کے پارٹی کارکنان اور این وائی او اکبرپورہ نے کلیدی کردار آدا کیا۔ میں ان لوگوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں اور ان سے اسی طرح پارٹی اور پختون قوم کی فلاح کے لیے دل و جان سے محنت کرنے کی توقع رکھتا ہوں۔ شمولیتی پروگراموں کے بعد میاں افتخار حسین اور پارٹی میں شامل ہونے والوں نے اکبرپورہ بازار میں جلوس بھی نکالی۔ میاں افتخار حسین نے کہا کہ یہ ہمارے لیے بڑی کامیابی ہے کہ لوگوں کو احساس ہورہا ہے کہ اے این پی واحد جماعت ہے جو پختونوں کی بقا اور ان کے حقوق کے لیے لڑ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارٹی میں شمولیت اور چند دن پہلے 513ووٹ لیڈ سے بلدیاتی ضمنی الیکشن میں اے این پی کی جیت سے یہ بات صاف واضح ہے کہ عوام پی ٹی آئی کی ناکام حکومت اور ان کی جھوٹے وعدوں سے تنگ آچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عوام نے صوبائی حکومت کی تبدیلی دیکھ لی وہ اب باچاخانی چاہتے ہیں جو کہ حقیقی تبدیلی ہے۔ جس میں برابری، انصاف اور عوام کو ان کے حقوق دینا ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام آنے والے الیکشن میں اے این پی کو کامیاب کر کے 2013 الیکشن میں ہونے والے نقصان کی تلافی چاہتے ہیں جو کہ خوشی کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے جھوٹی وعدوں سے عوام تنگ آچکے ہیں اور انہیں احساس ہوا ہے کہ پی ٹی آئی کو ووٹ دے کر انہوں نے کتنی بڑی غلطی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماحول بن گیا ہے۔ جمہوریت کے خلاف کسی سازش کو کامیاب نہیں ہونے دیںگے۔ملکی حالات کے تناظر میں اس وقت پاکستان کے لیے جمہوریت نہایت ضروری ہے۔ اے این پی جمہوری پارٹی ہے اور کسی غیر جمہوری اقدام کے نتیجے میں جمہوریت کو خطرہ لاحق ہوتا ہے تو اے این پی اس عمل کی بھرپورمزاحمت کرے گی۔میاں افتخار حسین نے کہا کہ ہم ہر قیمت پر امن لائیں گے، صوبائی حکومت اور مرکزی حکومت دہشتگردوں کے ساتھ ملے ہوئے ہیں جس کی وجہ سے عارضی امن ہے جو کہ اس خطے کے لیے نہایت خطرناک ہے، اصل اور حقیقی امن اے این پی لائے گی۔انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت نیشنل ایکشن پلان کے باوجود پنجاب میں موجود 72کالعدم تنظیموں کے خلاف کاروائی نہیں کر رہی ہیں جو کہ اس بات کی ثبوت ہے کہ انہیں عوام کی نہیں صرف اپنی ہی فکر ہے۔دہشت گردی کو مکمل طور پر ختم کرنے کے لیے اے این پی اپنی کوششیں جاری رکھے گی اور عوام کو حقیقی امن دلا ئیں گے۔میاں افتخار حسین نے ایک بار پھر پارٹی میں شمولیت اختیار کرنے والوں کو مبارکباد دی اور ان لوگوں کا بھی شکریہ ادا کیا جنہوں نے کثیر تعداد میں لوگوں کو پارٹی میں شامل کرنے کے لیے کوششیں کیں۔