اے این پی کے کارکن ناراض ہوکر بھی اپنے ضمیر کا سودا نہیں کرتے، سینیٹر باز محمدخان ایڈوکیٹ

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے سینیٹر حاجی باز محمد خان ایڈووکیٹ نے کہا ہے کہ اے این پی کے حقیقی کارکن ناراض ہوکر بھی اپنے ضمیر کا سودا نہیں کرتے، مخالف پارٹیوں کی جانب سے بھاری رقوم اور منصوبوں کے آفر کبھی قبول نہیں کرتے اور باچا خانی کے راستے پر دو بارہ گامزان ہو کر پختونولی کا ثبوت دیتے ہیں۔ ا±نہوں نے پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق صوبائی وزیر شیر اعظم وزیر کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ حلقہ پی کے 71میں اے این پی کے خلاف نازیبا الفاظ کا استعمال کرنے والے جان لیں کہ ہم با چا خان کے سپاہی ہیں ہماری تربیت ہی ایسی ہوئی ہے کہ کسی کی ذات پر حملہ نہیں کرتے الفاظ کی جنگ کرنی ہے تو سیاست کے دائرے میں رہتے ہوئے کریں ہم نے اگر ان کے حقائق قوم کے سامنے لائیں تو ہم اور ان میں فرق کا خاتمہ ہو جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے ڈومیل میں منعقدہ شمولیتی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔ اس موقع پراے این پی کے سابق کارکن اختر خان نے ناراضگی ختم کرکے اپنے خاندان و درجنوں ساتھیوں سمیت اے این پی کی بھر پور حمایت کا اعلان کیا۔ سینیٹر حاجی باز محمد خان نے آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے کہا کہ کسی کے انتخاب کا اختیار اور ترازو شہری کے پاس ووٹ کی شکل میں ہے وہ اپنی ترازو سے امیدوار کا ناپ تول کرکے انتخاب کر سکتے ہیں لیکن فیصلہ سوچ بیچار سے کرنا ہو گا۔ اے این پی کے رہنماوًں کی سوچ سیاسی نہیں بلکہ مثبت اور تعمیری ہے سیاسی سوچ رکھنے والے کی توجہ انتخابات جیتنے اور کرسی پانے پر ہوتی ہے یہی وجہ ہے کہ آئے روز عوام دیگر سیاسی جماعتوں سے مستعفی ہو کر عوامی نیشنل پارٹی میں شمولیت اختیار کر رہے ہیں جبکہ ناراض کارکن بھی دو بارہ اس کارروان میں شامل ہو رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم جھوٹی اعلانات اور وعدے نہیں کرتے، اے این پی نے اپنے دور اقتدار میں تاریخی ترقیاتی کام کیے ہیں اور آنے والے وقت دکھائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہاں کے عوام کی ضروریات پوری کی جائیں گی پورے حلقہ پی کے 71 میں تمام اقوام کو بلا تفریق حقوق دینے کا تہیہ کر رکھا ہے۔ اس موقع پر اختر خان نے کہا کہ ہمیں اپنانے کیلئے یہاں کے مقامی سیاستدانوں نے بہت کوششیں کیں بھاری رقوم اور منصوبوں کا آفر کیا ہم نے ٹھوکرا دیئے اور سینیٹر حاجی باز محمد خان ایڈووکیٹ کیساتھ چلنے کا فیصلہ کر لیا۔