پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کی رکن صوبائی اسمبلی ثمر ہارون بلور نے کہا ہے کہ ملک میں انصاف کا نظام ختم ہو چکا ہے اور احتساب کے نام پر سیاسی انتقام کا دور دورہ ہے،وزیر اعظم بنی گالہ میں ناجائز اراضی قبضہ کے بعد صادق و امین نہیں رہے لہٰذا وہ اخلاقی طور پر مستعفی ہو جائیں ،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ ملک میں انصاف کا ناظام قائم کرنے کیلئے احتساب کا عمل وزیر اعظم سے شروع کیا جانا چاہئے تھا، حکومت مزدور کْش پالیسی پر عمل پیرا ہے اور ایک کروڑ نوکریاں دینے والوں نے 120دنوں میں روزگار چھیننے کے سوا کوئی کام نہیں کیا، انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف پر خود کشی کو ترجیح دینے والے وزیر اعظم نے سب سے بڑا یو ٹرن لیا اور بھیک مانگنے کیلئے آئی ایم ایف کا رخ کر لیا ، ملک میں انصاف کا نظام نہیں رہا اور عوام انصاف کیلئے در در کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ غریب کے چولہے ٹھنڈے کرنے والی حکومت ایک سال سے زیادہ نہیں چل سکتی ،انہوں نے کہا کہ بنی گالہ میں اراضی پر ناجائز قبضہ سے گھر تعمیر کرنے والا صادق و امین کیسے ہو سکتا ہے لہٰذا وزیر اعظم نااہل ہو چکا ہے اور اب اسے اخلاقی جرات کا مظاہرہ کرتے ہوئے مستعفی ہو جانا چاہئے۔ثمر بلور نے کہا کہ ضمنی بلدیاتی الیکشن میں اے این پی کی واضح کامیابی کے بعد یہ ثابت ہو چکا ہے کہ 25جولائی کو عوامی مینڈیٹ پر ڈاکہ ڈالا گیا اور لاڈلے کو حکومت خیرات میں دینے کیلئے ہر حربہ استعمال کیا گیا جس میں ہارون بلور شہید کا خون بھی شامل ہے، انہوں نے کہا کہ ملک میں شفاف اور آزادانہ انتخابات ہوں تو اے این پی ملک کی بڑی سیاسی جماعت کے طور پر سامنے آئے گی، ثمر بلور نے کہا کہ احتساب کے نام پر انتقام کی پالیسی ملک کی سلامتی کیلئے زہر قاتل ہے ، احتساب میں انصاف نظر آنا چاہئے ، سیاسی مخالفین کو راستے سے ہٹانے کیلئے جو طور طریقے استعمال کئے جا رہے ہیں وہ ملک کی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں۔