گیند حکومت کے کورٹ میں ہے، فاٹا انضمام کا جلد اعلان کیا جائے، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ فاٹا پاکستان کا حصہ ہے اور اے این پی قبائلی عوام کی جدوجہد میں ان کے شانہ بشانہ کھڑی رہے گی ، فاٹا میں مردم شماری نئے سرے سے کرا کر این ایف سی ایوارڈ میں قبائلی عوام کو ان کا جائزحصہ دیا جائے ،موجودہ بین الاقوامی صورتحال میں حکومت کا سیاسی بیانیہ کمزور دکھائی دے رہا ہے ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے خٹک نامہ سپین خاک میں ایک بڑے شمولیتی اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر اہم سیاسی شخصیت خالد خٹک اور ان کے 63سے زائد ساتھیوں نے اپنے خاندانوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا ، میاں افتخار حسین نے پارٹی میں شامل ہونے والوں کو سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور انہیں تدبرانہ فیصلے پر خراج تحسین پیش کیا ،اپنے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اے این پی میں جوق در جوق شمولیتیں اس بات کا واضح ثبوت ہیں کہ عوام کی اکثریت نے صوبائی حکومت پر عدم اعتماد کا اظہار کر دیا ہے اور وہ مستقبل میں اپنے حقوق کا محافظ اے این پی کو ہی تصور کرتی ہے ،سیاسی صورتحال کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ اے این پی کا فاٹا انضمام کے حوالے سے مؤقف واضح ہے اور اب گیند حکومت کے کورٹ میں ہے وزیر اعظم شاہد خاقان قبائلی عوام کی امنگوں کے مطابق فاٹا کے صوبے میں انضمام کا اعلان جلد از جلد کر دیں ، انہوں نے کہا کہ صوبے کی صورتحال مخدوش ہو چکی ہے اور تمام محکمے مفلوج کر دیئے گئے ہیں جس کا سہرا موجودہ حکومت کے سر جاتا ہے ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ تعلیمی ایمرجنسی کا پول میٹرک کے نتائج نے کھول دیا جبکہ ڈینگی نے آ کر صحت کے انصاف کی حقیقت بھی آشکارا کر دی ، انہوں نے کہا کہ چار سال بلین سونامی ٹری میں مصروف حکومت نے اربوں روپے کی کرپشن صرف پودوں کی خریداری میں کی ہے ، خزانہ خالی ہو چکا ہے اور سرکاری ملازمین کے پنشن و جی پی فنڈ سے صوبے کے معاملات چلانے کی کوشش کی جا رہی ہے ، انہوں نے کہا کہ محکمہ صحت عمران کے کزن نوشیروان کو ٹھیکہ پر دے دیا گیا ہے جو بیرون ملک سے ویڈیو لنک کے ذریعے محکمہ کو چلا رہا ہے ، ہمارے سیکرٹری و ڈائریکٹر ہیلتھ اتنے نا اہل تھے کہ محکمہ کسی اور کے حوالے کر دیا گیا ، انہوں نے کہا کہ چار سال تک حکومت صرف اے این پی کے منصوبوں پر تختیاں لگا کر فنڈز بٹورتی رہی لیکن عوام کو کوئی میگا پراجیکٹ نہیں دیا ،اب باقی چہیتوں کو نوازنے کیلئے سرکاری کالجوں کی نجکاری کا منصوبہ بنایا گیا ہے جس کی کسی صورت اجازت نہیں دی جائے گی ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ اے این پی نے اپنے دور میں صوبے کے حوالے سے جو انقلابی اقدامات کئے ،دنیا اس کی معترف ہے ، البتہ موجودہ دور کی کرپشن بھی تاریخ کا حصہ ضرور بنے گی، انہوں نے کہا کہ مستقبل اے این پی کا ہے اور آئندہ الیکشن میں کامیابی کے بعد عوام کی خدمت کا سلسلہ جاری رکھیں گے۔