بے روزگاری پر قابو پانے کیلئے خودکفالت بہترین ہتھیار ہے ، میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین نے صوبہ بھر میں نوجوانوں کو اپنے پاؤں پر کھڑا ہونے کیلئے خود کفالت کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ چھوٹے کاروبار شروع کر کے بے روزگاری پر قابو پایا جا سکتا ہے ،ان خیالات کا اظہار انہوں نے تارومیں ایک مقامی ہوٹل کا افتتاح کے موقع پر تقریب کے شرکاء اور میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا ،قبل ازیں میاں افتخار حسین نے فیتہ کاٹ کر ہوٹل کا افتتاح کیا اور اس کے مالک شاہد خان کو مبارکباد پیش کی ، انہوں نے کہا کہ تعلیم کا حصول بنیادی ضرورت ہے تاہم تعلیم کا یہ مطلب ہر گز نہیں کہ نوجوان نسل علم کے حصول کو صرف سرکاری یا نجی ملازمتوں کے حصول کو مقصد بنا لے ، انہوں نے کہا کہ چھوٹے کاروبار کی روایت نیک شگون ہے اور اس طرح سرمایہ کاری کرنے والے افراد اپنے ساتھ ہر جگہ چند دیگر افراد کے رزق کا وسیلہ بن سکتے ہیں،انہوں نے کہا کہ آبادی میں اضافے کے ساتھ ساتھ بے روزگاری کی شرح میں بھی بے پناہ اضافہ ہوا ہے تاہم خود روزگار روایت سے اس پر کسی حد تک قابو پایا جا سکتا ہے ، انہوں نے کہا کہ معاشرے کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے اور بے روزگاری کے خاتمے کیلئے سب کو اپنا کردار ادا کرنا چاہئے جبکہ میڈیا کا اس حوالے سے کردار انتہائی اہم ہے ، انہوں نے کہا کہ عوام اور بالخصوص تعلیم یافتہ طبقے میں شعور اجاگر کرنے کی ضرورت ہے ، انہوں نے کہا کہ خود کفالت ترقی کی معراج ہے اور نوجوان طبقہ ملازمتوں کو حصول تعلیم کا مقصد بنانے کی بجائے ذاتی کاروبار پر توجہ دے، ، میاں افتخار حسین نے کہا کہ باچا خان بابا کے بنیادی فلسفہ میں مخلوق کی خدمت اولیں ترجیح ہے اور یہی وہ واحد راستہ ہے جس سے لوگ اپنے خاندان کی کفالت کرنے کے ساتھ ساتھ دوسروں کیلئے بھی روزگار کے مواقع پیدا کر کے انسانیت کی خدمت کر سکتے ہیں ، انہوں نے کہا کہ آج اس مقامی ہوٹل کا افتتاح علاقے کے عوام کیلئے عید کا تحفہ ہے اور امید ظاہر کی کہ مستقبل میں چھوٹے پیمانے پر ہوٹلنگ جیسے شعبہ پر توجہ دے کر اور خود کفالت و خود روزگاری کی راہ پر چلتے ہوئے عوام خود اپنے لئے ترقی کی منازل طے کر سکتے ہیں۔