تعلیمی ایمرجنسی کے نام پر اساتذہ کو بے تکریم کیا جا رہا ہے، سردار حسین بابک

پشاور(پ،ر) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری و پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ تبدیلی سرکار کی حکومت میں صوبے کے تمام اساتذہ احتجاج پر ہیں تعلیمی ایمرجنسی کے نام پر کب تک اساتذہ کو ستایا جائے گا،اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت کی ناقص منصوبہ بندی اور غیر سنجیدہ رویے نے صوبے کے تمام ملازمین کے ساتھ ساتھ اساتذہ کے آئے احتجاج سے ثابت ہوتا ہے کہ اس حکومت نے معاشرے کے محترم طبقے اساتذہ کو کتنا مقام دیا ہے؟ انہوں نے کہا کہ این ٹی ایس اساتذہ کی مستقلی ان کا جائز حق ہے اور ان کی مستقلی میں تاخیری حربے انتہائی افسوسناک ہیں، سردار حسین بابک نے کہا کہ صوبائی حکومت کو نئی بھرتی پالیسی کے وقت ضروری قانون سازی کرنا چاہئے تھی ، انہوں نے کہا کہ صوبائی حکومت نے آخری ایام میں اساتذہ کو یقین دہانی اور جھوٹے وعدوں سے ٹرخانے کی کوشش کی تاہم وہ اس میں ناکام ہو گئی ، انہوں نے کہا کہ اساتذہ میں پائی جانے والی بے چینی صوبائی حکومت کی کارکردگی پر سوالیہ نشان ہے ، انہوں نے کہا کہ اے این پی نے اساتذہ کو معاشرے میں ان کا جائز مقام اور تکریم دی اور یہی وجہ ہے کہ ہمارے دور حکومت میں تعلیمی اداروں کی بہتر کارکردگی کے باعث نتائج بھی بہترین آئے ، انہوں نے کہا کہ انصاف کے دعویدار حکومت صوبے میں تمام کیڈرز کے سکول اساتذہ کو جو کہ این ٹی ایس کے ذریعے بھرتی کیے گئے ہیں کو فوری طور پر مستقل کرے تاکہ وہ دلجمعی کیساتھ بہترین اساتذہ کا کردار ادا کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ فوری مستقلی اساتذہ کا جائز حق ہے اور اس حوالے سے قانون سازی کیلئے بلاتاخیر اقدامات کئے جائیں۔