پریس کانفرنس

 این اے4کا فیصلہ پہلے سے طے تھا ،انتخابی نتائج پر تحفظات ہیں، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے این اے4کے انتخابی نتائج پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے انہیں مسترد کر دیا ہے اور کہا ہے کہ الیکشن کمیشن ایک ایسا کمزور اور نااہل ادارہ ہے جو ایک حلقہ کے الیکشن کنٹرول نہیں کر سکتا ، ہمارے امیدوار کے علاقے میں پولنگ بوتھ کم کئے گئے اور منظم طریقے سے دھاندلی کی گئی ، ان خیالات کا اظہار انہوں نے پشاور پریس کلب میں این اے4کے انتخابی نتائج کے حوالے سے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، این اے4کے امیدوار خوشدل خان ایڈوکیٹ اور ارباب محمد طاہر خان خلیل بھی ان کے ہمراہ تھے ، سردار حسین بابک نے کہا کہ انتخابی عمل محض دکھاوا تھا اور دکھائی ایسا دیتا ہے کہ فیصلہ پہلے سے طے تھا، انہوں نے کہا کہ انتخابی مہم کے دوران دھاندلی کی تیاریاں جاری رہیں اور سرکاری وسائل کا بے دریغ استعمال کیا گیاجبکہ ہم نے اس حوالے سے الیکشن کمیشن کو تحریری طور پر آگاہ بھی کیا تھا لیکن کوئی شنوائی نہیں ہوئی اور الیکشن کمیشن خاموش تماشائی بنا رہا ،سردار بابک نے کہا کہ ہمارے پولنگ ایجنٹوں کو باہر بٹھایا گیا اور اندر صورتحال اپنی مرضی سے تبدیل کی جاتی رہی ، انہوں نے کہا کہ عوامی مینڈیٹ چوری کر کے اس کی توہین کی گئی ،جو انتہائی قابل مذمت ہے ، صوبائی جنرل سیکرٹری نے کہا کہ انتخابی نتائج پر تحفظات ہیں اور اے این پی ان نتائج کو تسلیم نہیں کرتی ،سہاروں کی بنیاد پر سیاست کرنا افسوسناک فعل ہے تاہم پی ٹی آئی اب اس میں ماہر ہو چکی ہے،انہوں نے حیرت کا ظہار کرتے ہوئے کہا کہ اگر فیصلہ پہلے سے طے تھا تو الیکشن کس لئے کرایا گیا،الیکشن کمیشن کا پی آر او نتائج دیتا رہا ۔