این اے 4کے عوام صوبے کے آئینی حقوق پر ڈاکہ ڈالنے والوں کو مسترد کر دیں گے، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ اے این پی پختونوں کی ترقی و خوشحالی کے لیے ماضی کی طرح مستقبل میں بھی اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ این اے 4کے عوام اپنے حقوق کے حصول اور ان کے تحفظ کے لیے اے این پی کا ساتھ دیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے این اے4کے انتخابی مہم کے سلسلے میں یونین کونسل موسیٰ زئی پھندومیں انتخابی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اے این پی چارسدہ کے صدر برسٹر ارشد عبداللہ اور ارباب کمال نے بھی اس موقع پر خطاب کیا۔ سردار حسین بابک نے کہا کہ مرکزی حکومت خیبر پختونخوا کے حقوق مسلسل ہڑپ کر رہی ہے جبکہ صوبائی حکومت نے ان تمام معاملات پر مجرمانہ خاموشی اختیار کی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں سیاسی جماعتوں کی قیادت کا تعلق پنجاب سے ہیں اور دونوں ہی جماعتوں نے پختونوں کو ورغلانے اور انہیں دھوکہ دینے کے لیے گٹھ جوڑ کیا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر مرکزہمارے صوبے کی بجلی کی آمدن شفافیت سے ادا کرے تو صوبہ ترقی یافتہ بن سکتا ہے۔ انہوں نے اس امر پر حیرت کا اظہار کیا کہ خیبر پختونخوا کے آئینی حقوق پر ڈاکہ ڈال کر مسلم لیگ این اے 4میں کس منہ سے وؤٹ مانگ رہی ہیں؟ انہوں نے کہا کہ ہمارے صوبے کی بجلی 80پیسے فی یونٹ کے حساب سے خرید کر ہمیں واپس 17روپے فی یونٹ بیچی جا رہی ہے۔ جبکہ اس کے باوجود صوبے کو اس کی ضرورت کے مطابق بجلی فراہم نہیں کی جاتی۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی اور مسلم لیگ این اے 4میں ٹرانسفارمر کی سیاست میں مصروف ہیں اور عوام کو دھوکہ دینے کی ہر ممکن کو شش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ این اے 4 اے این پی کا موروثی حلقہ ہے اور ضمنی الیکشن میں اے این پی کے امیدوار خوشدل خان ایڈوکیٹ کی جیت یقینی ہے۔