صوبے میں بیشتر پرائمری سکولوں کی بندش ۔عوامی نیشنل پارٹی نے تحریک التواء جمع کرادی

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے صوبے میں بیشتر پرائمری سکولوں کی بندش کے خلاف صوبائی اسمبلی میں تحریک التواء جمع کرادی ،اے این پی کے پارلیمانی لیڈر اور صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے تحریک التواء جمع کرائی ، تحریک میں مزید کہا گیا ہے کہ حکومت نے صوبے کے طول و عرض میں طلباء کی کم تعداد والے سکولوں کو بند کر دیا ہے جو تعلیم دشمنی کے مترادف ہے،انہوں نے کہا کہ اگر آبادی کو مد نظر رکھا جائے تو صوبے میں پہلے سے سکولوں کی تعداد انتہائی کم ہے تاہم ایسی صورتحال میں حکومت کی تعلیم دشمن پالیسی نہ صرف حیران کن بلکہ افسوسناک ہے ، انہوں نے کہا کہ انرولمنٹ میں اضافے اور سکولوں سے باہر رہنے والے بچوں اور بچیوں کو سکولوں میں لانے کیلئے سکولوں کو بند کرنا چاہئے یا ان کی تعداد میں اضافہ ہونا چاہئے؟۔ انہوں نے کہا کہ عالمی اداروں کی غیر جانبدارانہ رپورٹس کے مطابق سکول نہ جانے والے بچوں اور بچیوں کی تعداد لاکھوں میں بتائی جا رہی ہے اور ان تمام بچوں کو علم کی روشنی سے منور کرنے کیلئے موجودہ سکولوں کی حالت زار بہتر بنانے کے ساتھ ساتھ نئے سکولوں کی تعمیر بھی اشد ضروری ہے،تحریک میں مزید کہا گیا ہے کہ حکومت نے طلباء کی کم تعداد کو بنیاد بنا کر جن سکولوں کو بند کر دیا ہے ان پر سرکاری خزانے سے کروڑوں و اربوں روپے خرچ ہو چکے ہیں،انہوں نے کہا کہ حکومت اپنی یہ پالیسی واپس لے اور بچوں کی زیادہ سے زیادہ تعداد کو سکولوں میں لانے کیلئے والدین و کمیونٹی کو مزید متحرک کرے ،تاکہ وہ اپنے بچوں اور بچیوں کو سکول میں داخل کرائیں اور ساتھ ساتھ اس سلسلے میں حکومتی و معاشرتی سطح پر منظم اور تسلسل کے ساتھ مہم بھی چلانے کی ضرورت ہے،انہوں نے کہا کہ حکومت غیر ضروری اور غیر ذمہ دارانہ روش ترک کر کے مسئلے کے حل کیلئے اقدامات اٹھائے۔