احتسابی ادارے صوبے کے وسائل لوٹنے والوں کے خلاف فوری حرکت میں آئیں ،میاں افتخار حسین

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سیکرٹری جنرل میاں افتخار حسین نے کہا ہے کہ وزیر اعلیٰ پرویز خٹک پر کرپشن کے الزامات میں آئے روز اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور احتسابی اداروں کو اب حرکت میں آجانا چاہئے ،کرپشن کے خاتمے کے دعویداروں نے صوبے کے وسائل بے دردی سے لوٹ لئے ہیں، ان خیالات کا اظہار انہوں نے خٹک نامہ چپری اور سپین خاک میں مختلف شمولیتی اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کیا ، اس موقع پر چپری میں پیپلزپارٹی اور پی ٹی آئی سے عبدالرحمن۔صداقت علی۔شمس۔جاوید۔جبران۔شہریار گوہر زمان۔عتیق الرحمان جبکہ سپین خاک میں پی ٹی آئی سے ملک تمیز گل۔جلات خان۔گل روز۔شیر ولی۔نور حیدر۔جمع گل۔اعجازسمیت درجنوں افراد نے اپنے خاندان اور ساتھیوں سمیت اے این پی میں شمولیت کا اعلان کیا،میاں افتخار حسین نے شامل ہونے والوں کو سرخ ٹوپیاں پہنائیں اور انہیں مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ آئے روز اے این پی میں ہونے والی شمولیتیں اس بات کا ثبوت ہیں کہ عوام پی ٹی آئی کی کارکردگی سے متنفر ہو چکے ہیں، انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ارکان اسمبلی کے بعد اب ان کی خاتون رکن کی جانب سے پرویز خٹک پر لگائے گئے لزامات کی بھی تحقیقات ہونی چاہئے اور اس سلسلے میں احتسابی ادارے فوری حرکت میں آئیں، انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت سے عوام دوست پالیسیوں کی توقع رکھنا عبث ہے،انہوں نے کہا کہ تصوراتی ایجنڈے،غیر ذمہ دارانہ رویے اور غلط پالیسیوں کی وجہ سے صوبہ مسائل کی دلدل میں پھنستا جا رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ انتظامی امور سے نا بلد حکو مت کے دور میں ہر طبقہ فکر کے لوگ سراپا احتجاج ہیں،عوامی مسائل کا ادراک نہ رکنھے والی حکومت نہ صرف یہ کہ صوبے کے محدود وسائل استعمال کرنے میں ناکام ہو گئی ہے بلکہ صوبے کو تاریخ کے بدترین مالی و انتظامی بحران سے دوچار کر دیا ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبے میں ترقی کا پہیہ رک گیا ہے ،اور تمام امور ٹھپ ہو کر رہ گئے ہیں،جس کا خمیازہ دہشت گردی کے مارے عوام بھگت رہے ہیں،انہوں نے کہا کہ عوام کی نظریں اے این پی پر لگی ہیں اور اسی سے توقعات وابستہ کر رکھی ہیں،انہوں نے کہا کہ صوبے کے طول و عرض میں رابطہ عوام مہم کو مزید مضبوط بنانے پارٹی کو منظم کرنے اور صوبے و فاٹا کے کونے کونے تک شمولیتی تقاریب مزید بڑھانے کیلئے اپنی تمام توانائیاں بروئے کار لانا ہونگی ، انہوں نے کہا کہ عوام تبدیلی سرکار کے دعوؤں اور وعدوں کو جان گئے ہیں اور عوام کو 2018کے الیکشن کا اب شدت سے انتظار ہے تا کہ وہ اپنے ساتھ دھوکہ کرنے والوں سے ووٹ کے ذریعے بدلہ لے سکیں،انہوں نے کہا کہ اے این پی کی جڑیں عوام میں مزید مضبوط ہوتی جا رہی ہیں اور یہی وجہ ہے کہ اے این پی مخالف قوتیں نہ صرف بوکھلاہٹ کا شکار ہیں بلکہ اپنی مایوسی کا نزلہ کسی نہ کسی صورت عوام پر گرا رہی ہیں۔ میاں افتخار حسین نے کہا کہ نوشہرہ میں بطور وزیر میں نے جو ترقیاتی کام کئے وہ اپنی مثال آپ ہیں جبہ موجودہ حکومت کا وزیر اعلیٰ ،ایم این ایز اور ایم پی ایز یہاں سے منتخب ہوئے لیکن صورتحال ابتر ہوتی جا رہی ہے، انہوں نے کہا کہ آنے والا دور اے این پی کا ہے اور 2018کے الیکشن میں کامیابی کے بعد عوام کی خدمت کا سلسلہ دوبارہ شروع کریں گے۔