بد امنی میں اضافہ، عوامی نیشنل پارٹی نے صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرا دی

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی نے صوبے میں بڑھتی ہوئی بد امنی ، بھتہ خوری، اغواء برائے تاوان اور ٹارگٹ کلنگ کے خلاف صوبائی اسمبلی میں تحریک التوا جمع کرا دی ہے ، تحریک التواء صوبائی جنرل سیکرٹری اور پارلیمانی لیڈر سردار حسین بابک نے جمع کرائی جس میں کہا گیا ہے کہ صوبے بالخصوص پشاور میں امن و امان کی صورتحال بگڑ چکی ہے اور کوئی بھی شہری خود کو محفوظ تصور نہیں کرتا،تحریک میں مزید کہا گیا ہے کہ اغواء برائے تاوان ، بھتہ خوری ، دن دیہاڑے ڈکیتیوں اور ٹارگٹ کلنگ میں تشویشناک حد تک اضافہ ہو چکا ہے، انہوں نے کہا کہ عوام میں بے چینی اور خوف ہراس پھیلا ہوا ہے جبکہ کاروباری سرگرمیاں ماند پڑ چکی ہیں اور تجارت پیشہ افراد اپنا سرمایہ بیرون ملک منتقل کر رہے ہیں،سردار حسین بابک نے کہا کہ بیرونی ممالک سے سرمایہ صوبے کے اندر منتقلی میں ریکارڈ کمی آئی ہے جس سے روزگار کے مواقع بھی تقریباً ختم ہوتے جا رہے ہیں،جس کی وجہ سے جرائم میں آئے روز اضافہ ہوتا جا رہا ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبے میں مہنگائی اپنے عروج پر ہے اور صوبائی حکومت و ضلعی انتظامیہ اپنا کردار ادا میں بری طرح ناکام ہو چکی ہیں، عوام کو بھتہ خوروں ، ٹارگٹ کلرز ذخیرہ اندوزوں اور منافع خوروں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے اور صوبے میں حکومت نام کی کوئی چیز نظر نہیں آتی،تحریک التوا میں کہا گیا ہے کہ حکومتی منصوبہ بندی نہ ہونے اور غیر سنجیدگی کے باعث عوام گو نا گوں مسائل کا شکار ہیں لہٰذا عوام کے دکھوں کا مداوا اور ان کے مسائل کے حل کیلئے مؤثر اقدامات کی اشد ضرورت ہے۔