آخری سال کاترقیاتی بجٹ بھی لیپس کر گیا، حکمران لوٹوں کی تلاش میں سرگرداں ہیں، سردار حسین بابک

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سردار حسین بابک نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت کے آئے روز نت نئے تجربات نے صوبے کو مالی و انتظامی طور پر بدحال کر دیا ہے جس کا خمیازہ غریب عوام بھگت رہے ہیں ، اپنے ایک بیان میں انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ گزشتہ پانچ سال سے ترقیاتی بجٹ بروقت استعمال نہیں کیا گیا جو اس بات کا ثبوت ہے کہ موجودہ حکومت صوبے کی ناکام ترین حکومت ہے ،جبکہ مسائل میں آئے روز اضافہ مالی اور انتظامی طور پر بدحالی کا سبب ہے،انہوں نے کہا کہ موجودہ دور حکومت میں بیرونی امداد میں خطرناک حد تک کمی مرکزی سے صوبے کے حقوق کے حسول میں ناکامی اور صوبے کے اپنے محصولات کا ہدف پورا نہ کرنا انتہائی افسوسناک ہے ، انہوں نے کہا کہ صوبے کے محدود وسائل منظور نظر ممبران کے حلقوں میں سیاسی بنیادوں پر تقسیم کرنا نا انصافی کی انتہا ہے ، انہوں نے کہا کہ اسمبلی میں عددی اکثریت کی بنیاد پر اپنی پارٹی کے سرمایہ داروں اور سرمایہ کاروں کیلئے من پسند قوانین بنانا، اختیارات کا ناجائز استعمال ہے،صوبے کی آمدن کے مستقل اور بڑے ذرائع اپنے چہیتوں کے ہاتھوں فروخت کرنے کی سازش عوام کبھی معاف نہیں کریں گے، سردار حسین بابک نے کہا کہ ہمارے صوبے کی بدقسمتی ہے کہ اس پر نا بلد اور غیر سنجیدہ لوگ حکومت کر رہے ہیں جنہوں نے تمام شعبوں اور محکموں کا نام نہاد اصلاحات کے نام پر حلیہ بگاڑ دیا ہے ، میرٹ اور شفافیت کی دھجیاں اڑا دی گئی ہیں،اور صوبے کو بد ترین مالی بحران کا شکار کر دیا گیا ہے ،جس سے عوام بیرونی قرضوں کے بو جھ تلے دبے جا رہے ہیں ، اسی طرح محکموں کی اجازت کے بغیر صوبے کے نظام اور اپنے حلقوں کو فنڈز مہیا کرنے کی خاطر ان سے اربوں روپے بغیر کسی ضابطے اور قانونی تقاضے پورے کئے بغیر ہتھیائے جا رہے ہیں، انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت نے اپنے دور حکومت میں دوسرون پر کیچڑ اچھالنے ، الزامات لگانے اور خود کو فرشتہ ثابت کرنے کے علاوہ صوبے کے مفاد کا کوئی کام نہیں کیا جا رہا،یہی وجہ ہے کہ عوام موجودہ حکمرانوں سے نالاں ہیں، حکومت کے آخری سال میں وزیر اعلیٰ اور ان کی ٹیم آئندہ الیکشن جیتنے کی کوشش کیلئے صوبے کے طول و عرض میں لوٹوں کی تلاش میں ہے ۔