مورخہ 5 جون 2016ء بروز اتوار

چیف جسٹس پشاور ہائیکورٹ خواتین نرسوں پر تشدد کے خلاف سوموٹو ایکشن لے،سردار حسین بابک
حکومت نے اپنی مرضی کے بجٹ کے لئے اجلاس کی تاریخ تبدیل کرلی، ہم اسمبلی کے اندر اسمبلی لگائیں گے
ہم پر الزامات لگانے والے اب خود ہیو ی لوڈ کے مزے لوٹ رہے ہیں ،ہر محکمے میں’’ لفافہ‘‘ پالیسی چل رہی ہے
موجودہ دور حکومت میں تمام مکتبہ فکر کے لوگ احتجاج اور ہڑتال پر ہیں ،مردان میں میٹ دی پریس سے خطاب

پشاور ( پ ر ) عوامی نیشنل پارٹی کے صوبائی جنرل سیکرٹری اور صوبائی اسمبلی میں پارٹی کے پارلیمانی لیڈر سردارحسین بابک نے کہاہے کہ ہم پر الزامات لگانے والے اب ہیو ی لوڈ کے مزے لوٹ رہے ہیں ، اپنی مرضی کے بجٹ کے لئے اجلاس کی تاریخ تبدیل کرلی ، ہم اسمبلی کے اندر اسمبلی لگائیں گے ،صوبائی حکومت نے نرسنگ سٹاف کے مطالبات تسلیم کرنے کی بجائے انہیں سیاسی انتقام کا نشانہ بنادیاہے اور 140سے زائد نرسوں کو تبدیل کردیاگیاہے چیف جسٹس پشاورہائی کورٹ نرسوں کے معاملے پر از خود نوٹس لیں ، وہ مردان پریس کلب میں میٹ دی پریس سے خطاب کررہے تھے پارٹی کے مرکزی جنرل سیکرٹری میاں افتخار حسین ،مردان کے صدر اورضلع ناظم مردان حمایت اللہ مایار اور نائب صدر عباس ثانی سمیت دیگر بھی موجودتھے
انہوں نے صوبائی حکومت پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہاکہ آج ہر مکتبہ فکر احتجاج پر ہے اساتذہ سڑکوں پر ہیں تو ڈاکٹرز اورآفیسران بھی چیخ رہے ہیں نرسوں نے جب اپنے مطالبات کے حق میں آوازاٹھائی توان پر لاٹھیاں برسائی گئیں انہوں نے کہاکہ خواتین نرسوں کو تشدد کانشانہ بنایاگیا اوران کے خلاف سیاسی انتقامی کاروائیاں کی گئیں انہوں نے پشاور ہائی کورٹ کے چیف جسٹس سے مطالبہ کہ وہ معاملے کا ازخودنوٹس لیں اور انصاف کے تقاضے پورے کئے جائیں
سردارحسین بابک نے کہاکہ بلین ٹری سونامی میں کرپشن بے نقاب کرنے پر انٹی کرپشن کے ڈائریکٹر کو ہٹایاگیاانہوں نے کہاکہ حکومت ہم پر ایزی لوڈ کے الزامات لگارہی ہیں لیکن خود ہیوی لوڈ کے مزے لوٹ رہی ہے سی اینڈ ڈبلیو سے لے کر پبلک ہیلتھ تک اور ایریگیشن تک میں ’’ دراز میں لفافہ ڈالو‘‘ پالیسی اختیار کی گئی ہے انہوں نے کہاکہ ڈپٹی سپیکر کی سیٹ چودہ ماہ سے خالی تھا اور اس کے لئے حکومت نے اجلاس کو کئی ماہ تک معلق رکھا سردارحسین بابک نے کہاکہ صوبے کی پارلیمانی تاریخ میں پہلی بار اسمبلی فلور پر وزراء نے ایک دوسرے کے گریبان پھاڑے انہوں نے کہاکہ آئندہ اجلاس میں اپوزیشن اسمبلی کے اندر اسمبلی لگائے گی ۔